منی لانڈرنگ کیس ، شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت منظور

منی لانڈرنگ کیس ، شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت منظور

لاہور ( نیا ٹائم ) لاہور کی مقامی عدالت نے مسلم لیگ ن کے صدر اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز کی منی لانڈرنگ کیس میں یکم فروری تک عبوری ضمانت منظور کرتے ہوئے ایف آئی اے حکام کو انہیں گرفتار کرنے سے روک دیا ۔

لاہور کی سپیشل سنٹرل عدالت کے جج اعجاز الحسن نے چینی کے کاروبار کے ذریعے منی لانڈرنگ کے مقدمے میں مسلم لیگ ن کے صدر اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت دیتے ہوئے ایف آئی اے حکام کو ان کی گرفتاری سے روک دیا ہے ۔

اس موقع پر حمزہ شہباز عدالت میں پیش ہوئے تاہم قائد حزب اختلاف کورونا کے باعث گاڑی میں بیٹھ کر ہی حاضری مکمل کروائی ۔ عدالت نے کہا کہ بینکنگ جرائم کی عدالت میں دونوں ملزموں کی درخواستیں زیرِسماعت ہیں ۔ قانون کے مطابق ایک ہی مقدمہ کی دو مختلف عدالتوں میں سماعت نہیں ہو سکتی ۔

عدالت نے دونوں کو بینکنگ جرائم کی عدالت سے دائر ضمانتیں واپس لینے کا حکم دے کر سماعت کچھ دیر کیلئے ملتوی کی ۔ جس کے بعد ملزموں کی طرف سے بینکنگ جرائم عدالت سے عبوری ضمانت کی درخواست واپسی پر سپیشل سینٹرل عدالت نے دوبارہ سماعت کا آغاز کرتے ہوئے دونوں باپ بیٹے کی عبوری ضمانت یکم فروری تک ضمانت کر لی ۔

شہباز شریف کے وکیل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ میرے کلائنٹ کینسر کے مریض اور کورونا میں بھی مبتلا ہیں ۔ ڈاکٹروں کی ہدایت کے مطابق کورونا کی منفی آنے پر بھی انہیں 7 روز تک آرام کرنا ہے ۔ اس لیے عدالت سے درخواست ہے کہ لمبی تاریخ دی جائے ۔ جس پر عدالت نے کہا کہ اگر وہ یکم فروری کو حاضر نہیں ہو سکتے تو آپ درخواست دائر کر دیں ۔

 

چوہدری شجاعت نے نواز شریف کے متعلق بڑی بات کہہ دی