7 سال میں پہلی بارخام تیل کی قیمت 90 ڈالر فی بیرل سے تجاوز

7 سال میں پہلی بارخام تیل کی قیمت 90 ڈالر فی بیرل سے تجاوز

یوکرین (نیا ٹائم ویب ڈیسک ) یوکرین اور روس کے درمیان کشیدگی کے باعث عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت 90 ڈالر فی بیرل سے تجاوز کر گئی۔

 

غیر ملکی میڈیا اطلاعات کے مطابق روس اور یوکرین کے درمیان جاری کشیدگی کے باعث بدھ کے روز عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت گزشتہ 7 سالوں میں پہلی بار 90 ڈالر فی بیرل تک پہنچ گئی ہے ۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق روس یوکرین تنازع میں بڑھتی ہوئی کشیدگی کے باعث خام تیل کی سپلائی میں ممکنہ رکاوٹ پیدا ہو گئی ہے۔ذرائع کے مطابق ٹریڈنگ کے دوران برینٹ خام تیل کی قیمت 90 ڈالر17 سینٹس کی سطح پرپہنچ گئی جب کہ ڈبلیو ٹی آئی خام تیل 87 ڈالر 67 سینٹس میں فروخت ہوا ہے ۔

 

علاوہ ازیں عالمی منڈی میں گیس کی قیمت میں تقریباً 5 فیصد اضافہ دیکھا گیا ہے جس کے بعد ٹریڈنگ کے دوران گیس کی قیمت سوا 4 ڈالر فی ایم ایم بی ٹی یو ہوگئی ہے ۔خیال رہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن نے منگل کے روز کہا کہ اگر روس نے یوکرین پر حملہ کیا تو وہ صدر ولادیمیر پوٹن پر ذاتی پابندیاں عائد کرنے پر غور کریں گے۔ دریں اثنا، روس نے یوکرین کی سرحد پر تقریباً 1لاکھ فوجی تعینات کیے ہیں لیکن اس نے حملے میں ملوث ہونے سے انکار کر دیا ہے۔

 

یوٹیلیٹی سٹورز پر مختلف اشیاء مہنگی کرنے کا فیصلہ