نور مقدم قتل کیس ، ظاہر جعفر کی والدہ کے وکیل کا اعتراض

نور مقدم قتل کیس ، ظاہر جعفر کی والدہ کے وکیل کا اعتراض

اسلام آباد ( نیا ٹائم ) نور مقدم قتل کیس کے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے خلاف ٹھوس شواہد کی موجودگی کے حوالے سے اسلام آباد پولیس کے اعلامیہ پر ملزم کی والدہ ( ملزمہ عصمت آدم ) کے وکیل نے اعتراض اٹھا دیا ۔

دوران سماعت ملزمہ عصمت آدم کے وکیل نے کہا آئی جی اسلام آباد جسٹس سسٹم میں مداخلت کر رہے ہیں ، پولیس وضاحت کو کیس ریکارڈ کا حصہ بنایا جائے ۔ جس پر عدالت نے ریمارکس دئیے پولیس وضاحت سرکاری طور پر ہوئی ہے تو بہت بری بات ہے جس پر سخت ایکشن لیا جائے گا ۔

جرح کے دوران تفتیشی افسر کی ایک اور غلطی بھی منظر عام پر آ گئی ، تفتیشی افسر نے کہا کہ گواہ مدثر علیم کا نام پورے کیس میں کہیں درج نہیں کیا گیا اور اس کا بیان محمد مدثر کے نام سے درج کیا گیا مگر پولیس ڈائری میں اس غلطی کا ذکر نہیں ۔

تھراپی ورکس کے زخمی ملازم کے بیان ریکارڈ نہ کرنے کے حوالے سے تفتیشی افسر نے کہا کہ زخمی امجد محمود کے والد نے بیان دیا تھا کہ وہ کارروائی نہیں کرنا چاہتے جس پر ہم نے کارروائی نہیں کی ۔

جرح کے دوران تفتیشی افسر نے بیان درست کرنے کی استدعا کی تو وکیل اسد جمال نے کہا اب جو بھی درست کرنا ہو گا وہ آئی جی پولیس ہی اپنے وضاحتی بیان میں کریں گے ۔

مدعی کے وکیل کی درخواست پر سی سی ٹی وی فوٹیج بھی ان کیمرہ عدالت میں چلائی گئی ، جس کے بعد کیس کی مزید سماعت 2 فروری تک ملتوی کر دی گئی ۔

 

ناظم جوکھیو قتل کیس کا حتمی چالان عدالت جمع ، 7 ملزموں کے نام خارج