جنوبی ایشیا میں انڈیا دہشت گردی کی ماں ہے

جنوبی ایشیا میں انڈیا دہشت گردی کی ماں ہے

نیویارک(نیاٹائم ویب ڈیسک)اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم کا کہنا ہے کہ انڈیا دہشت گردی سے متاثر نہیں بلکہ جنوبی ایشیا میں دہشتگردی کی ماں ہے۔

 

یونائیٹڈ نیشن میں پاکستان کے مستقل مندوب منیر اکرم کا سلامتی کونسل سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ انڈیا نے 1989 سے اب تک 96 ہزار کشمیریوں کو شہید کیا، تقریباً 23000 خواتین بیوہ، 11 ہزار سے زیادہ  خواتین سے ریپ کیاگیا اور ایک لاکھ مکان اور سکول تباہ کیے گئے۔

 

پاکستان کے مندوب کا مزید کہنا تھا کہ 5 اگست 2019کے بعد سے 9 لاکھ انڈین فوجی مقبوضہ کشمیر میں موجود ہیں،  معصوم کشمیری نوجوانوں کو ماورائے عدالت قتل کرنے کیلئےفیک مقابلوں کا سہارا لیا جا رہا ہے، کشمیری محلوں، شہری مراکز اور دیہاتی علاقوں کو تباہ اور جلا کر مشترکہ سزائیں دی جا رہی ہیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ انڈین آرمی نے پیلٹ گن کا استعمال کر کے سیکڑوں کشمیری بچوں کو بینائی سےمحروم کر دیا، 13 ہزار کشمیری نوجوانوں کو زبردستی گرفتارکیاگیا اور مقبوضہ کشمیر کو مسلم اکثریتی ریاست سے ہندو اکثریتی علاقے میں بدلنے کا کام جاری ہے۔

 

منیر اکرم کا بتانا تھا کہ پاکستان نے پچھلےبرس ایک مستند اور تحقیق شدہ ڈوزئیر جاری کیا، ڈوزئیر میں 1989 سے انڈین قابض افواج کے جنگی جرائم کے 3432 واقعات کے آڈیو اور وڈیو شواہد کی کنفرمیشن کی گئی، سلامتی کونسل سے ڈیمانڈ کرتے ہیں کہ وہ ان جرائم کے اصل ثبوتوں کا نوٹس لے  اور جنگی جرائم و انٹرنیشنل ہومین لاء کی سنگین خلاف ورزیوں پر انڈین اہلکاروں کو جوابدہ ٹھہرائے۔

 

پاکستان کے نمائندے کا کہنا تھا کہ انڈیا دہشت گردی کا شکار نہیں ہے بلکہ انڈیاجنوبی ایشیا میں دہشت گردی کی ماں ہے جب کہ پاکستان نے 2014 سے انسداد دہشتگردی کی کارروائیوں سے اپنی سرزمین کو دہشت گرد دھڑوں سے پاک کیا۔

 

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا سب سے بڑا مسئلہ انڈیا اور افغانستان کی سرزمین سے لگاتار دہشت گردانہ حملے ہیں، ان دہشت گرد حملوں کی مالی مدد، سرپرستی اور حمایت کی جاتی ہے، انڈین خفیہ ایجنسی کے تعاون سے تحریک طالبان پاکستان اور جے یو اے پاکستان میں دہشت گردی میں شامل ہیں۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ 2020 میں پاکستانی آرمی اور شہری اہداف کے خلاف 1000 سے زیادہ سرحد پار دہشت گرد اٹیک کیے گئے، انڈیا نے 29 جون 2020 کو کراچی سٹاک ایکسچینج سمیت پاکستانی آرمی اور شہری اہداف پر حملوں میں مدد کی، انڈیا نے سلامتی کونسل کی لسٹ میں شامل دہشت گرد اداروں کی مالی مدد اور سپورٹ کی، 23 جون 2021 کو لاہور اور 14 جولائی 2021 کو داسو میں چینی اور پاکستانی انجینئروں پرحملہ کروایاگیا۔

 

منیر اکرم کا بتاناتھا کہ فروری 2020 میں نئی دہلی میں مسلمان مخالف قتل عام کی طرف توجہ مرکوز کرانا چاہتا ہوں، تقریباً یومیہ گائے کے مسئلے پر مسلمانوں کو ٹارگٹ کلنگ کانشانہ بنایاگیا، گزشتہ برس بھارت میں کرسچن گرجا گھروں پر 400 اٹیک کیے گئے۔

 

پاکستان کے مندوب کا  مزیدیہ بھی بتانا تھا کہ دو ہفتے پہلے انتہا پسند ہندوتوا کی جانب سے بھارت کے مسلمانوں کی نسل کشی کا اعلان کیا گیا، سلامتی کونسل کو جینوسائیڈ واچ کےہیڈ کی بات ماننی چاہیے کہ بھارت میں نسل کشی ہو سکتی ہے۔

 

برطانوی وزیراعظم کیخلاف پولیس انویسٹی گیشن کریگی