تشدد کیس میں دستبردار ہونے والے متاثرہ لڑکے اور لڑکی کا دعوی مسترد

تشدد کیس میں دستبردار ہونے والے متاثرہ لڑکے اور لڑکی کا دعوی مسترد

اسلام آباد(نیا ٹائم ) اسلام آباد میں تفتیشی افسرکی جانب سےجوڑے پرتشدد کیس میں دستبردار ہونے والے متاثرہ لڑکے اور لڑکی کے دعوے کو مسترد کردیاگیا۔

 

اسلام آباد کی ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن عدالت میں ای 11 سیکٹرمیں لڑکے اور لڑکی پر تشدد کیس کی سماعت ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج عطاربانی نے کی۔

 

ملزم کے وکیل نےجرح کے دوران تفتیشی افسرانسپکٹرشفقت کوبتایا کہ متاثرہ لڑکی اورلڑکاخود8 جولائی کوپولیس کے پاس آئے تھے۔متاثرہ لڑکا تین بارشامل تفتیش ہونےکےلیےتھانے آیا جب کہ متاثرہ لڑکی وویمن تھانے سے جائے وقوعہ پرپولیس کے ساتھ گئی تھی ۔تفتیشی افسر نے مزید کہا کہ متاثرہ لڑکے نے اپنے اور متاثرہ لڑکی کے کپڑے خود پولیس کے حوالے کیے تھے۔

 

تفتیشی افسرنےمتاثرہ جوڑے کےسادہ کاغذ پردستخط کرنے کے بیان کوبھی جعلی قرار دیتے ہوئےعدالت کوبتایا کہ دو افراد نےمتاثرہ جوڑے کی ویڈیو بنائی تاہم یہ معلوم نہیں ہوسکاکہ یہ ویڈیو کس موبائل فون سے وائرل ہوئی۔عدالت کی جانب سےکیس کی مزید سماعت ملتوی کردی گئی ۔

 

یاد رہےکہ گزشتہ برس جولائی میں سوشل میڈیا پر لڑکی اور لڑکے پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس کے بعد اسلام آباد پولیس نے ایکشن لیتے ہوئے تشدد کرنے والے بااثر ملزم عثمان مرزا سمیت کئی افراد کو گرفتارکرلیاتھا۔

 

پاکستان میں غربت میں کمی آئی ہے ، وزیراعظم