داعش نے 850 سے زائد بچوں کو یرغمال بنا لیا

داعش نے 850 سے زائد بچوں کو یرغمال بنا لیا

ہساکے ( نیا ٹائم ویب ڈیسک ) شام کے صوبے ہساکے میں کرد فورسز اور داعش کے درمیان جنگ جاری ہے ، جس میں اب تک 120 سے زائد افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں ، تاہم داعش کے جنگجوؤں نے کرد فورسز کے زیر انتظام چلنے والی جیل پر قبضہ کر کے 850 بچوں کو یرغمال بنا لیا ۔ داعش کے جنگجو بچوں کو ڈھال کے طور پر استعمال کر رہے ہیں ، جبکہ جیل میں موجود اسلحہ بھی داعش نے قبضے میں لے لیا ہے ۔

اقوام متحدہ کے ادارے یونیسیف کے مطابق بچوں کی زندگیاں خطرے سے دوچار ہیں اورانہیں فوری طور پر داعش کے قبضے سے چھڑوا کر جلد سے جلد نکالے جانے کی ضرورت ہے ۔

یونیسیف نے مزید کہا ہے کہ بچوں کو نقصان پہنچانے یا انہیں جبراً داعش میں شامل کئے جانے کا بھی خدشہ ہے ۔ دوسری جانب سیرین ڈیموکریٹک فورسز کا کہنا ہے کہ انہوں نے جیل کا محاصرہ کر رکھا ہے ، دہشتگرد کہیں بھی بھاگ نہیں سکتے ۔ تاہم اگر بچوں کو کچھ بھی ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری داعش پر عائد ہو گی ۔

واضح رہے اس سے قبل جائے وقوعہ کے قریب موجود عالمی ادارے کے نمائندے نے دعویٰ کیا تھا کہ جیل پر حملے کے بعد سے شدید جھڑپیں جاری ہیں اور وقتاً فوقتاً بھاری ہتھیار استعمال کئے جا رہے ہیں ۔ جبکہ کرد فورسز نے اعلانات کر کے مقامی افراد کو علاقے سے فوری انخلا کا بھی حکم دیا ہے ۔

 

شامی شہری میزائل کو بطور ہیٹر استعمال کرنے پر مجبور