شامی شہری میزائل کو بطور ہیٹر استعمال کرنے پر مجبور

شامی شہری میزائل کو بطور ہیٹر استعمال کرنے پر مجبور

شام (نیا ٹائم ویب ڈیسک)مسلسل خانہ جنگی کے سبب شام میں سردیوں کے موسم میں لوگوں نے گرمائش حاصل کرنے کے لیے میزائل کو ہی ہیٹر بنا لیا۔

 

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق شام کے صوبے ادلب کے شہر جسر  ال شُغر میں اسعد العبید نامی شخص نے سردی کی شدت سے بچنے کے لیے اپنے گھر میں میزائل کو ری سائیکل کرکے اسے ہیٹر میں تبدیل کر دیا۔

 

شامی شہری اسعد العبید نےاس حوالے سے کہا ہے کہ ملک میں مسلسل جنگ کے باعث یہاں کے لوگ ہیٹرخریدنے کی سکت نہیں رکھتے ہیں۔رپورٹس کے مطابق  بچے اور خواتین سمیت دیگر افراد علاقے میں گرے ہوئے میزائل اور راکٹ ڈھونڈتے رہتے ہیں۔

 

شامی شہری اسعد نے مزید بتایا کہ انہیں بھی یہ میزائل گھر کے پاس سے ملاتھا جسے انہوں نے قریبی لوہار سے ہیٹر میں تبدیل کروا لیاتھا۔

 

رپورٹ کے مطابق مقامی لوہار 28 سے 32 سینٹی میٹرکے فاصلہ پر رکھ کر راکٹ اور میزائلوں کو احتیاط سے خالی کرکے انہیں ہیٹر کے طور پر استعمال کے قابل بناتا ہے۔میزائل کے بارود کو وہاں کے مقامی کان کن سرنگ کی تعمیر یا پتھر توڑنے کے لیے خرید لیتے ہیں۔

 

تاہم یہاں یہ بات بھی قابلِ ذکر ہے کہ یہ خطرناک کام لوگ بغیر  کسی بھی خوف کے کر رہے ہیں جس سے ان کی قیمتی جان بھی جا سکتی ہے۔

 

سعودی عرب میں جسم فروشی کا مکروہ دھندہ چلانے والا ملزم گرفتار