محکمہ تعلیم میں عارضی ڈیوٹی پر پابندی کی خلاف ورزی

محکمہ تعلیم میں عارضی ڈیوٹی پر پابندی کی خلاف ورزی

بہاولنگر(نیا ٹائم)محکمہ تعلیم میں عارضی ڈیوٹی پرپابندی کی خلاف ورزی  کرتے ہوئے بااثرملازمین/اساتذہ کی عارضی ڈیوٹیاں لگادی گئی۔ جس سے بچوں کی تعلیم متاثر ہورہی ہے۔

 

 تفصیلات کے مطابق محکمہ تعلیم میں عام طورپر بااثرملازمین اپنے مقام تعیناتی دورہونے یا دیگر وجوہات کی بنا پرعارضی ڈیوٹی کے آرڈرز کروا لیتے ہیں۔ ڈی پی آئی ایجوکیشن ساؤتھ پنجاب نے بذریعہ لیٹرنمبری 1354 بہاولنگرمیں عارضی ڈیوٹیاں ختم کرنے کا حکم دیا جس پرعمل درآمد کرتے ہوئے تمام عارضی ڈیوٹیاں ختم کردی گئیں مگر جو بااثر ہیں وہ پھر بھی ڈیوٹیاں لگوا رہے ہیں۔

 

گورنمنٹ ہائی سکول روڈا سنگھ تحصیل بہاولنگر کے ٹیچر ای ایس ای (میتھ- سائنس)مسٹر سہیل انور کی عارضی ڈیوٹی سیکرٹری سکول ایجوکیشن پنجاب کے دفتر میں انکے پرسنل سیکرٹری کے پاس لگا دی گئی ہے۔ سی ای او ایجوکیشن بہاولنگر سے موقف جاننے کے لیے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کوئی جواب نہیں دیا۔دفترسی ای او ایجوکیشن بہاولنگرمیں تعینات ایک اہلکارنے اپنا نام ظاہر نا کرنے کی شرط پر بتایا کہ ٹیچر موصوف نے 21 اکتوبر 2021 کو عارضی ڈیوٹی لگوائی اوراس کی معیاد ختم ہونے پر دوبارہ ڈیوٹی لگوا لی ہے۔

 

اس اہلکارنے یہ بھی بتایا کہ عارضی ڈیوٹی انتہائی ناگزیرحالات یا ضرورت کے تحت لگائی جا سکتی ہے۔ سیکرٹری محکمہ تعلیم پنجاب کے پرسنل سیکرٹری کے پاس ایسی کونسی اسائنمنٹ ہے جو کہ بہاولنگر سے تعلق رکھنے والے ایک ای ایس ای (میتھ-سائنس) ہی مکمل کر سکتے ہیں۔ کیا اتنے تعلیمی معیار یا قابلیت کا کوئی بندہ لاہور میں موجود نہیں ہے جو بہاولنگر کے بارڈر ایریا میں موجود دور دراز کے بچوں سے تعلیم کا حق چھین کر تخت لاہورکے افسران اپنے من پسند لوگوں کو نواز رہے ہیں۔

 

 یہاں پر سوال اٹھتا ہے کہ جس سکول سے ٹیچر کو بھیجا گیا ہے کیا وہاں پر یہ استاد اضافی تھا۔ اگراضافی تھا تو اس کا تبادلہ ہی سیکرٹری سکول ایجوکیشن کے دفتر میں کردیا جائے کیونکہ ٹیچرصاحب کو ٹیچنگ کی بجائے دفتری کام کا زیادہ شوق ہے۔ اوراگر ٹیچر اضافی نہیں تھا تو کیا سیکرٹری سکول ایجوکیشن نے اس کی جگہ پرکسی اورٹیچر کو بھیج دیا ہے، بچوں کے والدین اپنے بچوں کو تعلیم کے لئے سکول میں بھیجتے ہیں اوراگر ٹیچر دفتری ڈیوٹی کریں گے تو بچوں کو  تعلیم کون دے گا۔اہل علاقہ نے وزیراعلیٰ پنجاب اوروزیرتعلیم پنجاب ڈاکٹر مرادراس سے اپیل کی ہے کہ ان کے سکول کے ٹیچر کو واپس بھیجا جائے تاکہ بچوں کی تعلیم متاثرنا ہو۔

 

باغوں کاشہرجگمگائے گا،حکومت نے بڑافیصلہ کرلیا