وفاقی دارالحکومت انتخابات کا معاملہ کھٹائی میں پڑنے کا خدشہ

وفاقی دارالحکومت انتخابات کا معاملہ کھٹائی میں پڑنے کا خدشہ

اسلام آباد ( نیا ٹائم ) وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات کا معاملہ کھٹائی میں پڑنے کا خدشہ، الیکشن کمیشن ذرائع کے مطابق لوکل گورنمنٹ آرڈیننس 2021 کے تحت ابھی تک الیکشن کمیشن کو رولز فراہم نہیں کئے گئے جس کے باعث بلدیاتی انتخابات کے انعقاد میں تاخیر کا خدشہ  ہے ۔

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کے زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں سیکرٹری الیکشن کمیشن نے بریفنگ دیتے ہوئے انتخابی فہرستوں کی نظر چانی سے متعلق اب تک ہونے والی پیش رفت سے متعلق اراکین کو بریف کیا ۔ سیکرٹری الیکشن کمیشن نے بتایا کہ وفاقی دارالحکومت ، پنجاب ، سندھ اور بلوچستان میں حلقہ بندیوں کا عمل جاری ہے ۔

انہوں نے آگاہ کیا کہ دارالحکومت کے لوکل باڈیز انتخابات کے  حوالے سے اسلام آباد لوکل گورنمنٹ آرڈیننس 2021 ء کے رولز ابھی تک فراہم نہیں کئے گئے ، جس کے باعث انتخابات میں تاخیر کا خدشہ ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اسلام آباد لوکل گورنمنٹ آرڈیننس میں بھی چند اہم ترامیم کی ٖضرورت ہے ۔

بلدیاتی انتخابات رولز کی عدم فراہمی کے معاملے پر الیکشن کمیشن نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے حکم دیا کہ اگلے ہفتے چیف الیکشن کمشنر اسلام آباد اور وزارت داخلہ کے نمائندوں کو طلب کیا جائے تاکہ رولز اور ضروری ترامیم کی بروقت فراہمی کو یقینی بنا سکیں ۔

اس موقع پر الیکشن کمیشن سیکرٹریٹ میں ڈیٹا سنٹر کی تعمیر اور پرنٹنگ کی سہولیات کی تکمیل کے حوالے سے بھی آگاہ کیا گیا ۔ چیف الیکشن کمشنر نے تمام صوبائی الیکشن کمشنرز کو ہدایت کی کہ وہ  انتخابی فہرستوں کی نظر ثانی کے حوالے سے لوگوں کو مکمل آگاہی اور معاونت فراہم کریں ۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کو بھی یقینی بنایا جائے کہ آئندہ عام انتخابات 2023 سے قبل تمام اہل ووٹرز کے ووٹوں کا اندراج کر لیا جائے ۔

 

پی ٹی آئی کی سکروٹنی کمیٹی کی رپورٹ خفیہ رکھنے کی درخواست مسترد