سانحہ مری کی تحقیقاتی رپورٹ تاخیر کا شکار

سانحہ مری کی تحقیقاتی رپورٹ تاخیر کا شکار

راولپنڈی ( نیا ٹائم ) سانحہ مری کی تحقیقاتی رپورٹ تاخیر کا شکار ہو گئی ۔ رپورٹ کی تیاری میں مزید ایک سے دو دن درکار ہوں گے ۔

سانحہ مری کی تحقیقات کے لیے قائم کی گئی تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ تاخیر کا شکار ہو گئی ہے ۔ واقعہ کی تحقیقات کرنے والی کمیٹی نے 10 جنوری سے تحقیقات کا آغاز کیا تھا اور 7 روز میں رپورٹ تیار کر کے اعلیٰ حکام کو پیش کرنا تھی ۔ مری میں شدید برف باری کے بعد گاڑیوں میں پھنسنے کے باعث بچوں اور عورتوں سمیت 22 معصوم سیاح جاں بحق ہو گئے تھے ۔

وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے حکم پر سانحہ کی تحقیقات کر کے ذمہ داروں کو تعین کرنے کے لیے پنجاب حکومت نے 9 جنوری کو ایڈیشنل چیف سیکرٹری ظفر نصراللہ کی قیادت میں 4 رکنی تحقیقاتی کمیٹی قائم کی تھی ۔

کمیٹی نے سانحہ کی تحقیقات مکمل کر کے 7 روز میں رپورٹ پیش کرنا تھی تاہم کمیٹی کے تشکیل کے 8 روز بعد بھی رپورٹ تیارنہیں کی جا سکی ہے ۔

دوسری جانب ترجمان پنجاب حکومت حسان خاور کا کہنا ہے کہ سانحہ مری کی تحقیقاتی رپورٹ تیار کی جا رہی ہے جسے جلد عام کے سامنے پیش کیا جائے گا ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سانحہ مری کے حوالے سے قائم کی گئی تحقیقاتی کمیٹی کی رپورٹ کو مکمل ہونے میں مزید ایک سے دو دن درکار ہیں ، کمیٹی اپنی تحقیقات کو رپورٹ کی شکل میں ترتیب دے رہی ہے ۔

رپورٹ کی تیاری میں تاخیر کے حوالے سے ذرائع کا دعویٰ ہے کہ تحقیقاتی کمیٹی نے مکمل تحقیقات کی ہیں جس میں درجنوں انتظامی ، آپریشنل افسران سمیت سٹاف اور سانحہ میں محفوظ رہنے والے سیاحوں کے انٹرویوز بھی شامل ہیں ۔

ذرائع کا کہنا ے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب پریس کانفرنس کر کے رپورٹ کی روشنی میں لائحہ عمل اور اقدامات کی تفصیلات سے آگاہ کریں گے ۔

 

ملکہ کوہسار جانے والےسیاحوں کیلئے قواعد وضوابط طے