• Thursday, 27 January 2022
خیبرپختونخوا کے ہسپتالوں میں کوئی سہولیات نہیں،چیف جسٹس

خیبرپختونخوا کے ہسپتالوں میں کوئی سہولیات نہیں،چیف جسٹس

اسلام آباد(نیاٹائم) چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے ایک کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئےکہ کے پی کے ہسپتالوں میں عام شہریوں کیلئے کوئی سہولت نہیں ہے اور مجھے ڈر لگ رہا ہے کہ جلد خیبرپختونخواہ  ہسپتال فائیو سٹارہوٹلوں میں تبدیل ہوجائیں گے۔

 

چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں سپریم کورٹ میں  اقلیتوں کی عبادت گاہوں سے متعلق کیس پر سماعت ہوئی جس کے سلسلے متروکہ وقف املاک بورڈ کے چیئرمین اور چیف سیکرٹری کے پی اور دیگر کورٹ میں خاضرہوئے۔

 

کیس کی سماعت کے دوران  رمیش کمار نے کورٹ  کو بتایا کہ کراچی میں دھرم شالا کی اراضی پرکمرشل پلازہ بن رہا ہے۔ جس پر متروکہ وقف املاک بورڈ کے چیئرمین نے کہا کہ دھرم شالا تاریخی  تھا اور زمین متروکہ وقف کی ہے اوراس پرتعمیرات  ہوسکتی ہیں۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئےکہ کیا اس طرح تمام پرانی بلڈنگز گرانے کا حکم دے دیاجائے؟ 1932 سے قائم دھرم شالا کو آپ اصل حالت  میں قائم نہیں رکھ پائے،  چیئرمین صاحب، آپ اپنی ذمہ داریوں سے فرارنہیں ہوسکتے، جین مندر لاہور اور نیلا گنبد کے معاملے پروفاقی تحقیقاتی ادارے  نے کیا ایکشن لیا ہے؟

 

کورٹ  نے ایف آئی اے کوکراچی میں دھرم شالاکی زمین پرقبضےکا مقدمہ اورشواہد پیش کرنےکاآرڈر دیتے ہوئے کہا کہ فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی  لوگوں کو ہراساں نہ کرے، لوگوں کو ایف آئی اے سے ڈر نہیں ہونا چاہیے کہ یہ اُٹھا کرلےجاسکتےہیں، ایف آئی اے انویسٹی گیشن  کے نام پرجال بچھا دیتا ہے کہ کتنی مچھلیاں اس دائرے میں آسکتی ہیں، پورا ملک ان حرکات کی وجہ سے عدم استحکام کا شکار ہوچکاہے۔

 

چیف جسٹس نے کہا  کہ اتنی بڑی کرتارپور راہداری بنادی گئی ہے  لیکن  باقی ملک میں بھی اقلیتیں بستی   ہیں۔اقلیتی رکن اسمبلی نے کورٹ کو بتایا کہ خیبرپختونخوا کے سرکاری ہسپتالوں میں اقلیتوں کیلئے کوئی فسیلیٹیز موجود نہیں  ہیں، جس  پر چیف جسٹس  نے چیف سیکرٹری کے پی کو روسٹرم پر طلب کرلیا اور سوال کیا کہ چیف سیکرٹری صاحب، آپ نے کے پی کے سرکاری ہسپتالوں کا ویزٹ کیا؟ چیف سیکرٹری نے کہا کہ ایک ہسپتال کا دورہ کیا جس میں تمام طبی سہولیات تھیں۔

 

کروڑوں کے فلیٹس والے سڑک پر آگئے، سندھ ہائیکورٹ