• Thursday, 27 January 2022
کروڑوں کے فلیٹس والے سڑک پر آگئے، سندھ ہائیکورٹ

کروڑوں کے فلیٹس والے سڑک پر آگئے، سندھ ہائیکورٹ

کراچی(نیاٹائم) سندھ  کی بڑی عدالت نے ایک مہینے میں مکہ ٹیرس کے غیر قانونی حصے کو گرانے کا حکم دےدیا۔

 

سندھ ہائیکورٹ میں مکہ ٹیرس سے متعلق کیس کی سماعت کی گئی جس میں  جسٹس اظہر رضوی نے ریمارکس دیئے کہ شہروں میں ہی مکینوں کو مہاجر بنا دیا گیا اور کروڑوں مالیت کےفلیٹس خریدنے والےآج سڑکوں پر آچکے ہیں، ان سے پوچھیں جنہوں نے  اپنی زندگی بھر کی جمع پونجی لگادی۔

 

 سماعت کے دوران  عدالت نے بلڈر سے پوچھا  کہ ایک فلیٹ کی کتنی مالیت  ہے؟ بلڈر محمد وسیم نے بتایا کہ ایک فلیٹ کی قیمت20 لاکھ  ہے،سندھ ہائیکورٹ نے غلط بیان پر بلڈر کو ڈانٹ  پلا دی۔سندھ ہائیکورٹ نے کہا کہ صدر میں ایک پورشن 20لاکھ کا، کیا کہہ رہے ہو؟ ایک کروڑ سے سوا کروڑ کا فلیٹ ہوگا، 20 لاکھ روپے میں تو سپر ہائی وے پر پلاٹ میسرنہیں۔

 

جسٹس سید حسن رضوی نےریمارکس دیئےکہ  نہیں چاہتے کہ مکینوں کو نقصان پہنچے، کسی سے ناانصافی نہیں ہونے دیں گے، صرف چاہتے ہیں کہ عمارت کے غیرقانونی حصے کوگرایاجائے۔

 

سندھ ہائیکورٹ نے ایس بی سی اے افسروں کو مکہ ٹیرس کا الیگل  حصہ احتیاط کے ساتھ ایک مہینے  میں گرانے کا حکم دے دیا۔عدالت نے آرڈر دیا کہ 6 مہینے تک بلڈر فلیٹس کی تزئین وآرائش کرے گا اور عمارت بحالی کے بعد بلڈر ایس بی سی اے سے بھی رجوع کرےگا۔

 

رینجرز نے 3 دہائیوں بعد جامعہ کراچی کا ہاسٹل خالی کر دیا