آئی ایم ایف کے پاس مجبوری میں جاتے ہیں،وزیراعظم

آئی ایم ایف کے پاس مجبوری میں جاتے ہیں،وزیراعظم

اسلام آباد(نیاٹائم) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہےکہ آئی ایم ایف کے پاس مجبوری میں جاتے ہیں اور ان کی شرائط ماننے کیلئے عوام پر بوجھ بڑھاناپڑتاہے۔

 

تقریب میں  خطاب کےدوران  وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جس طرح سکیورٹی فورسز نے ہمیں محفوظ رکھا اس پر انہیں خراج تحسین پیش کرتا ہوں، دہشت گردی  کیخلاف جنگ میں ہماری فورسز نے پاکستان کو محفوظ بنایا، جو فورسز اپنے ملک کو محفوط نہیں بناسکیں انکے ملکوں کا حال دیکھ لیں، ہم خوش قسمت ہیں ہمارے پاس منظم اور بہترین تربیت یافتہ فورسز ہیں۔

 

وزیراعظم نے آئی ایم ایف کےبارے میں کہا کہ اگر آپ کو ہر تھوڑی دیر بعد آئی ایم ایف جانا پڑے تو آپ کی سکیورٹی ایفکٹ ہوگی، ملک کی معیشت کمزور ہو گی تو دفاع بھی کمزور ہو جائےگا، معیشت میں کبھی یہ نہیں سمجھا گیا کہ ہمیں خود کو  محفوظ کیسےکرنا ہے، ہماری گروتھ ریٹ اوپر جاتی ہے تو کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ جاتاہے۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ ہم عالمی مالیاتی ادارے  کے پاس مجبوری میں جاتے ہیں کیونکہ آخر میں ہماری مدد کرنے والا آئی ایم ایف ہی بچتا ہے جو ہمیں سب سے سستے قرض فراہم کرتا ہے، ہمیں ان کی شرائط ماننا پڑتی ہیں اور ہم جو وہ شرائط مانتے ہیں تو عوام پر بوجھ بڑھاناپڑتاہے۔

 

وزیراعظم عمران خان  کا کہنا تھا کہ عوام کا آپ کے ساتھ کھڑے ہونا سب سے بڑی سکیورٹی ہے، جب عوام ملک بچانے کیلئے سٹیک ہولڈر بن جائیں تو یہ سب سے بڑی  نیشنل  سکیورٹی ہوتی ہے، ہماری پوری کوشش ہے کہ نچلے طبقے کو اوپر لایاجائے۔

 

وزیراعظم کے دورہ چین کے شیڈول کی تصدیق ہو گئی