کچی شراب نے 14 گھرانے اجاڑ دئیے

کچی شراب نے 14 گھرانے اجاڑ دئیے

حیدر آباد ( نیا ٹائم ) حیدر آباد کے قریبی ضلع ٹنڈو الہ یار میں کچی شراب پینے کے باعث 14 افراد  کی جانیں چلی گئیں ، متعدد افراد کی آنکھوں کی بینائی چلی گئی ۔ کئی ابھی بھی ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں ۔

پولیس حکام نے تصدیق کی ہے کہ ٹنڈو الہ یار میں زہریلی شراب پینے سے 12 افراد زندگی کی بازی ہار گئے ہیں ، جبکہ متعدد افراد کی بینائی متاثر ہوئی ہے ، جبکہ کئی افراد ابھی تک بے ہوش ہیں اور انہیں مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا ہے جہاں ان کی جانیں بچانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں ۔

ٹنڈو جام پولیس نے کچی شراب کی فروخت میں ملوث افراد کے خلاف دو مقدمات درج کرتے ہوئے کچی زہریلی شراب بیچنے والے ایک شخص کو گرفتار کر لیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق سندھ پولیس بڑے ڈیلرز پر ہاتھ ڈالنے سے گریزاں ہے ۔ پولیس کی جانب سے تاحال شراب کی بھٹیوں کے خلاف بھی کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے ۔

دو روز قبل ضلع حیدر آباد کے علاقے ٹنڈو جام و گرد و نواح میں متعدد افراد نے کچی شراب پی جس کے بعد منگل کے روز 7 افراد زندگی کی بازی ہار گئے ، بدھ کو 4 جبکہ آج ایک مزید متاثرہ شخص ہسپتال میں دم توڑ گیا ۔

کئی افراد کی بینائی متاثر ہوئی ہے جنہیں ہسپتال میں طبی امداد دی جا رہی ہے ۔ تاہم مرنے والوں کے ورثاء نے موت کی وجہ کچی شراب کے بجائے دیگر عوامل کو قرار دیا ہے ۔اب تک مرنے والوں میں حامد علی راجپوت ، عامر راجپوت ،  عرفان راجپوت ، کیول رام ، تاج عرف تاجو مگسی سمیت دیگر شامل ہیں ۔

 

شاہ رخ جتوئی کا معاملہ، محکمہ داخلہ سندھ کا حکم آگیا