• Thursday, 27 January 2022
پارلیمنٹ کےباہراپوزیشن جماعتوں کااحتجاج

پارلیمنٹ کےباہراپوزیشن جماعتوں کااحتجاج

اسلام آباد(نیا ٹائم ) حزب اختلاف کی جماعتوں نے پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا ۔

 

تفصیلات کےمطابق پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر اپوزیشن جماعتوں کے احتجاج کے باعث مرکزی دروازے کو خاردار تاریں لگا کر بند کردیا گیا تاہم اپوزیشن جماعتوں کے کارکنوں نے پارلیمنٹ کی عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کی لیکن ناکام رہے۔

 

پاکستان پیپلز پارٹی(پی پی پی ) اور مسلم لیگ ن کے کارکنوں نے حکومت کے خلاف پارلیمنٹ کی عمارت کے باہر مارچ کیا۔ اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے پارلیمنٹ ہاؤس آمد کے موقع پر مظاہرین سے خطاب بھی کیا۔اس سے قبل شہباز شریف کا ایک بیان میں کہنا تھا کہ ملک میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے گندم، کبھی آٹا، چینی تو کبھی کھاد اور پٹرول کے بحران گھوم گھوم کرعوام پر نازل ہو رہے ہیں۔

 

انہوں نے کہا کہ عام صارفین کے حقوق کا تحفظ حکومت کی قانونی اور انتظامی ذمہ داری ہے لیکن جب کوئی بحران آئے گا تو حکومت ذمہ دار ہوگی۔جے یو آئی کے رہنما مولانا اسعد محمود کا کہنا تھاکہ ہم عوام کے حق کی جنگ ہر پلیٹ فارم پر لڑیں گے اور اپنی آزادی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے ملک کا معاشی نظام آئی ایم ایف کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

 

وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے پارلیمنٹ ہاؤس پہنچنے کے بعد ویڈیو بیان میں کہا کہ وہ منی بجٹ منظور کرائیں گے۔ چھوٹی گاڑیوں، نمک، کالی مرچ، ڈبل روٹی اور دودھ پر ٹیکس ختم یا کم کیا جائے گا ۔ فنانسنگ ایکٹ میں بچوں کے دودھ پر ٹیکس ختم کر دیا گیا ہے۔

 

ہوا میں جانےکےبعد کورونا وائرس کتنی دیرتک مؤثررہتاہے؟تحقیق سامنےآگئی۔