پاکستان میں پہلی بار پیٹرول 150 روپے فی لیٹر ہونے کا امکان

پاکستان میں پہلی بار پیٹرول 150 روپے فی لیٹر ہونے کا امکان

اسلام آباد(نیا ٹائم)عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافے کے بعد پاکستان میں بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے۔

 

 کمپنی ذرائع کے مطابق عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافے کے بعد پاکستان میں پہلی بار پیٹرول کی قیمت 150 روپے فی لیٹر ہونے کا امکان ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ 16 جنوری سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 6 روپے فی لیٹر اضافے کا امکان ہے۔

 

مارکیٹنگ کمپنیوں کے ذرائع کا کہنا ہے کہ پیٹرول کی قیمت میں 5 روپے اور ڈیزل کی قیمت میں 6 روپے فی لیٹر اضافے کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ خیال رہے کہ نئے سال کے موقع پر اوگرا نے پیٹرول کی قیمت میں تین روپے دو پیسے فی لیٹر اضافے کی سمری ارسال کی تھی تاہم پٹرولیم دویژن نے اوگرا نے اس سمری پر عمل کرنے کی بجائے فی لیٹر میں 4 روپے کا اضافہ کیا تھا۔

 

پیٹرولیم ڈویژن کے ذرائع کا کہنا ہے کہ عالمی مارکیٹ کے مطابق اضافہ صارفین تک پہنچایا گیا ہے۔ 31 دسمبر کو وزارت خزانہ نے یکم جنوری 2022 سے تمام پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا اعلان کیا، وزارت خزانہ کے نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول 4 روپے مہنگا کرکے 144.82 روپے فی لیٹر ہوگیا، سپیڈ ڈیزل 4 روپے بڑھنے سے 141.62 روپے، لائٹ اسپیڈ ڈیزل 4 روپے 15 پیسے مہنگا ہو کر 111 روپے 21 پیسے اور مٹی کا تیل 3 روپے 95 پیسے مہنگا ہو گیا۔

 

قیمتیں 15 جنوری کے لیے مقرر کی گئی تھیں۔ فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے پیٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس کی شرح پر نظر ثانی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ ایف بی آر نے پیٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس کی شرح میں ردوبدل کا نوٹیفکیشن جاری کردیا۔ نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول پر سیلز ٹیکس کی شرح 4.77 فیصد، ہائی سپیڈ ڈیزل پر سیلز ٹیکس 9.08 فیصد، مٹی کے تیل پر سیلز ٹیکس 8.30 فیصد اور لائٹ ڈیزل پر سیلز ٹیکس دو روپے ستر پیسہ طے کیا گیا ہے

 

یادرہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بہت زیادہ اضافے کے باعث حکومت نے نومبر 2021 میں پیٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس کی شرح صفر کردی تھی تاہم بین الاقوامی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں اضافے کے پیش نظر16 جنوری سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ایک بارپھر اضافے کا امکان ہے۔

 

نیوی سیلنگ کلب گرانےکافیصلہ چیلنج