کوئٹہ،ینگ ڈاکٹرز اور حکومت کے مابین  مذاکرات کامیاب

کوئٹہ،ینگ ڈاکٹرز اور حکومت کے مابین مذاکرات کامیاب

کوئٹہ(نیاٹائم)کوئٹہ  میں حکومت، ینگ ڈاکٹرز اور پیرا میڈکس کے مابین  مذاکرات کامیاب ہو گئے ہیں  جس کے بعد ینگ ڈاکٹرز نےایمرجنسی سروسز بحال کردی ہیں۔

 

 ڈاکٹرز کا سرکاری ہسپتالوں کی او پی ڈیز اور ان ڈور سروسز کا بائیکاٹ تاحال جاری ہے،دوسری جانب چیئرمین ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ڈاکٹر حفیظ مندوخیل کے مطابق حکومتی کمیٹی سے آج مذاکرات کے بعد آئندہ کا لائحہ عمل بتایا جائے گا، اجلاس میں پیشرفت کی صورت میں او پی ڈی سروس بھی بحال کردی گئی ہے۔

 

واضح  رہے کہ پچھلے روز اپنے مطالبات کے حق میں احتجاج کرنے والے ینگ ڈاکٹرز نے ریڈزون جانے کی کوشش کی جس پر پولیس نے ڈاکٹرز پر لاٹھی چارج کرتے ہوئے 20 ڈاکٹروں کو گرفتار کرلیا جبکہ اس دوران 6  پولیس اہلکار زخمی بھی ہوئےتھے۔

 

رات گئے مذاکرات کامیاب ہونے پر گرفتار ڈاکٹروں کو رہا کیا جاچکا ہے،گرفتار ڈاکٹراور پیرا میڈیکل سٹاف رہائی کے بعد سول ہسپتال پہنچے اور رہائی پانے والے ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل سٹاف کو وزرا کی گاڑیوں میں تھانےسے ہسپتال منتقل کیا گیا۔

 

چندروز قبل وزیراعلی ٰ بلوچستان اور ینگ ڈاکٹرزکے مابین مذاکرات نتیجہ خیز نہ نکلنے کے بعد ڈاکٹر حنیف لونی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے تین بڑے مطالبات ہیں جن میں محکمہ ہیلتھ  کی پالیسی، سروس سٹرکچر اور سپتالوں میں طبی سہولیات کی فراہمی شامل  ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت اور وزیراعلیٰ بلوچستان  مذاکرت میں سنجیدہ نہیں ہیں اور ہمارے گرفتار ڈاکٹرز دس دن سے جیل میں ہیں  مگر ہم نے عوام کی مشکلات کومدنظر رکھتے ہوئے انتہائی قدم نہیں اٹھایا ہے۔

 

اب سوئی سے خون نکالے بغیر شوگر کی تشخیص ممکن