سری لنکا کا آئی ایم ایف کے چنگل میں پھنسنے سے انکار

سری لنکا کا آئی ایم ایف کے چنگل میں پھنسنے سے انکار

کولمبو ( نیا ٹائم ویب ڈیسک ) سری لنکا نے اپنی لنکا بچا لی ، آئی ایم ایف کے چنگل میں پھنسنے سے انکار کرتے ہوئے پیکیج لینے سے انکار کر دیا  ۔

سری لنکا نے معاشی چیلنجز سے نمٹنے کے حوالے سے عالمی مالیاتی ادارے کے پاس جانے سے انکار کر دیا ہے ۔ سری لنکن مرکزی بینک کے گورنر کا اجیت نیوارڈ نے کہا ہے کہ آئی ایم ایف کوئی جادو کی چھڑی نہیں جس سے معیشت بہتر ہو جائے گی ۔ ہم مستقبل میں آئی ایم ایف کے بجائے چین سے قرض لینے کا ارادہ ہے ۔

سری لنکن مرکزی بینک کے گورنر کا کہنا تھا کہ قومی اور بین الاقوامی سطح پر کافی دباؤ تھا کہ معاشی بحران سے نمٹنے کے لیے عالمی مالیاتی ادارے کا بیل آؤٹ پیکیج لیا جائے تاہم سری لنکا نے تمام تر دباؤ کو بالائے طاق رکھتے ہوئے آئی ایم ایف کے پاس جانے کے بجائے دیگر آپشنز بھی موجود ہیں ۔

انہوں نے مزید کہا کہ چینی حکام کے ساتھ نئے قرض کے حوالے سے بات چیت جاری ہے جو حتمی مراحل میں داخل ہو چکی ہے جلد نیا معاہدہ بھی طے ہو جائے گا ۔

سری لنکن گورنر سٹیٹ بینک نے چین کے ساتھ قرض کا حجم ابھی نہیں بتایا تاہم یہ کہا ہے کہ برآمدات سے جڑئے وسیع معاملات کی فنڈنگ کے لیے بھارت کے ساتھ بھی ایک ارب ڈالر کے قرض کی بات چیت کی جا رہی ہے ۔

واضح رہے پاکستان نے حال ہی میں معاشی بحران کے پیش نظر عالمی مالیاتی ادارے سے بیل آؤٹ پیکیج حاصل کیا تھا جو قسطوں کی صورت پاکستان کو مل رہا ہے ۔ پاکستان کو قرض کی نئی قسط کے اجراء کے حوالے سے آئی ایم ایف کا جائزہ اجلاس 12 جنوری کو طے تھے جو پاکستانی حکام کی درخواست پر مؤخر کر دیا گیا تھا ۔

ذرائع کے مطابق پاکستان کے لیے قرض کی اگلی قسط کے اجراء سے قبل آئی ایم ایف کا جائزہ اجلاس اب 28 یا 31 جنوری کو متوقع ہے ۔

حکومت کی جانب سے منی بجٹ بھی قومی اسمبلی میں پیش کیا گیا ہے جس پر اسمبلی میں بحث بھی جاری ہے ۔ ضمنی مالیاتی بل ابھی تک اسمبلی سے پاس نہیں ہو سکا ہے ۔

 

اقوامِ متحدہ کی تمام ممالک سےاپیل،آخرکس لیے