ہریتھک روشن کا سابقہ اہلیہ کے ساتھ قابلِ ستائش رویہ

ہریتھک روشن کا سابقہ اہلیہ کے ساتھ قابلِ ستائش رویہ

 ممبئی (نیاٹامٔ ویب ڈیسک) ہریتھک روشن سپر ہٹ ہیرو ہونے  کے ساتھ ساتھ بااخلاق اور قابلِ مثال انسان بھی ہیں۔اس بات کا اندازہ انکے  اس رویے سے لگایا جا سکتا ہے جو انہوں نے اپنی اہلیہ کو طلاق دینے کے بعد روا رکھا۔

 

میڈیارپورٹس کے مطابق بھارتی فلم انڈسٹری کے معروف ہدایتکار، پروڈیوسر اور رائٹر راکیش روشن نے اپنے بیٹے ہریتھک روشن کے اخلاق اور حسنِ سلوک سے متعلق ایک قصہ سنایا جس کو سن کر داد دیے بنا نہیں رہا جا سکتا۔

 

حال ہی میں بھارتی میڈیا کو دیے گئے انٹرویو کے دوران راکیش روشن  نے 2014 کے واقعہ کا ذکر کیا جب ہریتھک اور ان کی اہلیہ سوزین خان کے درمیان 14 سال بعد طلاق ہوئی۔راکیش نے بتایا کہ 2014 میں جب بیٹے اور سابقہ بہو  کی طلاق ہوئی تو عدالت سے باہر نکلنے کے بعد ہریتھک نے سابق اہلیہ سوزین کے لیے خود آگے بڑھ کر گاڑی کا دروازہ کھولا اور انہیں عزت کے ساتھ گاڑی میں بٹھایا۔

 

ہدایتکار نے کہا کہ یہ عمل بیٹے کے عاجزانہ اور بااخلاق کردار کی عکاسی کرتا ہے۔مزید انکا کہنا تھا کہ زبردستی یا طاقت کے زور پر کسی کو کچھ سکھایا نہیں جا سکتا۔ایسی عادتیں انسان کے اندر قدرتی طور پر ہوتی ہیں یا انسان خود اپنے ضمیر کی آواز سن کر انہیں پروان چڑھاتا ہے۔راکیش روشن کے مطابق ہریتھک  روشن صرف خواتین ہی نہیں بلکہ تمام لوگوں کے ساتھ عاجزی اور حسن اخلاق سے پیش آتا ہے۔

 

دی کراؤن میں کردار ادا کرنے والی میں ہوں:مہوش حیات