بغیر ثبوت شریف فیملی پر کیسز بنانے کا کہا گیا،بشیرمیمن

بغیر ثبوت شریف فیملی پر کیسز بنانے کا کہا گیا،بشیرمیمن

لاہور(نیاٹائم )سابق ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن کا کہنا ہےکہ انہیں بناء ثبوت شریف فیملی کے ارکان پر کیسز بنانے سے متعلق کہا گیا۔

 

لاہور کی سیشن عدالت کے باہر میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے  بشیر میمن نے کہا کہ یہ کیس میرے سامنے آیا تھا اور مجھے بھی کہا گیا تھا ،  شہباز شریف کی فائل دیکھ کر بتا دیا تھا کہ منی لانڈرنگ کا کیس نہیں بنتا۔بشیر میمن کے مطابق شہباز شریف پر جس عرب شیخ کو فائدہ دینے کا الزام لگایا گیا وہ اب وزیر اعظم سے ملنے جا رہا ہے اور اس کی متعدد وزرا کے ساتھ تصاویر بھی ہیں۔

 

انہوں نے مزیدکہا کہ مجھے شریف فیملی کے خلاف کیسز بنانے کا کہا گیا، ایک انٹرویو میں جو باتیں کیں حکومت نے پرکھنے کے بجائے ان پر ہی الزامات لگا دیئے۔سابق ڈی جی کا کہنا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف کے ٹرولز تنخواہ لے کر لوگوں کی پگڑیاں اچھالتے ہیں۔بشیر میمن   نےوفاقی تحقیقاتی ایجنسی نے ایف آئی اے کے حکام بالا سے اپیل کی کہ وہ ادارے کی ساکھ کو نقصان نہ پہنچائیں اور میرٹ پر کام کریں۔

 

خیال رہے کہ اس قبل بھی متعدد بار سابق ڈی جی ایف آئی اے کی جانب سے یہ الزام سامنے آچکا ہے کہ انکو شریف فیملی کے خلاف کیسز بنانے کے لئے کہا گیا تھا انہوں نے متعدد ٹی وی پروگرامز میں اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ بناثبوت شریف خاندان کے خلاف کیسز بنانے کو کہا گیا۔

 

آصف زرداری کو نیب تحقیقات میں ریلیف مل گیا