کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے نئی حکمت عملی جاری۔

کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے نئی حکمت عملی جاری۔

 لاہور(نیا ٹائم) کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے نئی حکمت عملی جاری کردی گئی جس کے تحت بوسٹر ڈوز تین گروپس کو لگائی جائے گی۔

 

تفصیلات کے مطابق صوبہ پنجاب میں کورونا ویکسین کی بوسٹر ڈوز کے حوالے سے پالیسی جاری کردی گئی ہے جس کے تحت ماہرین صحت، کمزور مدافعتی نظام والے افراد اورحال ہی میں کورونا وائرس سے صحت یاب ہونے والے افراد بوسٹر ڈوزلگا سکیں گے۔  پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر پنجاب نے بوسٹر ویکسین سے متعلق پالیسی جاری کر دی ہے جس کے مطابق پنجاب میں 3 گروپوں کو کورونا وائرس سے بچاؤ کی بوسٹر ڈوز دی جائے گی۔

 

پالیسی کے مطابق 30 سال سے زائد عمر کے افراد بوسٹر ڈوز حاصل کر سکتے ہیں، ہسپتالوں میں کام کرنے والے ہیلتھ پروفیشنلز بوسٹر ڈوز لے سکتے ہیں اور کم قوت مدافعت والے مریض بھی بوسٹر ڈوز حاصل کر سکتے ہیں۔ محکمہ صحت کی پالیسی کے مطابق بوسٹر ڈوز کے لیے پہلی ویکسینیشن 6 ماہ کا ہونا ضروری ہے۔ حالیہ دنوں میں، کورونا وائرس سے صحت یاب ہونے والے مریضوں کو 28 دن کے بعد ویکسین لگائی جا سکتی ہے۔

 

بوسٹرڈوزمیں موڈرنا،سائنو ویک،سائنو فارم،اورفائزرکی بوسٹر خوراکیں شامل ہوں گی۔ اس حوالے سے ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ پنجاب نے تمام ڈسٹرکٹ ہیلتھ اتھارٹیز کو مراسلہ ارسال کر دیا ہے۔ NCOC کی طرف سے جاری کردہ پہلے پیغام میں کہا گیا تھا کہ 30 سال سے زیادہ عمر کے افراد کو1جنوری سے بوسٹر ڈو کا اطلاق کرنا چاہیے۔ بوسٹر ڈوز آخری خوراک کے 6 ماہ بعد لگائی جائے گی۔

 

این سی او سی نے شہریوں سے اپیل کی کہ وہ ایس او پیز پرعمل کریں،ماسک پہنیں اوراومکرون کے بڑھتے ہوئے کیسزکی وجہ سے ویکسینیشن اوربوسٹرڈوز لگائیں۔ اس سے قبل گزشتہ روز نیشنل کمانڈ اینڈ سیٹر کے سربراہ اسد عمر اورمعاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل نے مشترکہ پریس کانفرنس میں بتایا تھا کہ دنیا میں اومی کرون تیزی سے پھیل رہا ہے اوراسے محفوظ رکھنے کے لیے ویکسینیشن ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اومی کرون جنوبی افریقہ سے پھیلنا شروع ہوا، اب پاکستان میں بھی اومی کرون کے کیسز بڑھ رہے ہیں، اس ویریئنٹ کی رفتار بہت تیز ہے، لوگ پرہجوم جگہوں پر جانے سے گریز کریں، ماسک پہنیں اوراحتیاطی تدابیر اختیار کریں۔

 

اومی کرون پاکستان میں تیزی سے پھیل رہا ہے،اسدعمر