پاکستان  دیوالیہ ہو چکا،سابق چیئرمین ایف بی  آر کا انکشاف

پاکستان دیوالیہ ہو چکا،سابق چیئرمین ایف بی آر کا انکشاف

 

کراچی (نیا ٹائم )سابق چیئرمین ایف بی   آر شبر زیدی  نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان دیوالیہ ہوچکا ہے۔ان کے اس بیان  نے ملکی معیشت کے ترقی کی جانب گامزن ہونے کے حکومتی دعوے کی قلعی کھول  دی ہے ۔

 

کراچی میں طالبعلوں کی جانب سے منعقدہ نجی تقریب سے خطاب کرتے ہوئےپی  ٹی  آئی  دور حکومت کے سابق  چیئرمین  فیڈرل بورڈ آف ریونیو شبر زیدی کا کہنا تھا کہ اکاؤنٹنگ کی اصطلاح میں اس وقت ملک دیوالیہ ہوچکا ہے اورموجودہ حکومت کا معاشی میدان میں کامیابی حاصل کرنے کا یہ دعوی  اور یہ کہنا کہ سب  کچھ ٹھیک ہے عوام کوصرف اور صرف   دھوکہ دینے کے مترادف ہے۔

 

شبر زیدی کا مزید کہنا تھا کہ کرنٹ اکاؤنٹ اور مالی خسارے کی صورت حال ملک کو دیوالیہ ہونے کی طرف لے جارہی ہے جبکہ وزارتِ اقتصادی امور کے پچھلے  دنوں شائع کردہ اعداد و شمار سے بھی سابق چیئرمین ایف بی آر کے اس  بیان کو تقویت ملتی ہے جس میں یہ  بتایا گیا تھا کہ پاکستان تحریک انصاف کی  حکومت   پچھلے تین سالوں میں  چالیس  ارب ڈالر کا بیرونی قرضہ  لے چکی ہے  جب کہ  پچھلے  پانچ مہینوں کے دوران 4.6 ارب ڈالر کا قرضہ لیا گیا  جو ماہانہ ایک ارب ڈالر سے زیادہ  بنتا ہے اور یہ ملک کی  تاریخ کا لیا جانے والا سب سے بڑا قرضہ ہے۔

 

واضح  رہے کہ سابق چیئرمین  فیڈرل بورڈ آف ریونیوپاکستان تحریک انصاف کی حکومت میں مئی 2019ء سے اپریل 2020ء تک چیئرمین ایف بی آر کے عہدے پرتعینات رہے ہیں ۔ عہدہ سنبھالنے سے پہلے وہ چارٹرڈ اکاؤنٹینٹ کمپنی فرگوسن کے  سینیئرپارٹنر تھے۔ اس لیے ان کے  اس بیان  کی وجہ سے عوام میں مایوسی اور تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے  کیوں کہ یہ بیان کسی سیاستدان  کا نہیں بلکہ ایک ایسے شخص کا ہے جو اکاؤنٹنگ کی دنیا میں ایک بڑا نام تصور کیا جاتا ہے۔ مگر بعد میں  مبینہ دباؤ پر شبر زیدی کو یہ وضاحت دینا پڑی کہ کرنٹ اکاونٹ اور مالیاتی خسارے کی موجودہ صورت حال کی وجہ سے  انہوں نے معیشت کے دیوالیہ ہونے کی بات کی تھی۔

 

 

اسحاق ڈار لندن میں کروڑوں کی جائیداد کے مالک بن گئے۔