ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلوں پر پابندی کی وجوہات سامنےآگئیں

ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلوں پر پابندی کی وجوہات سامنےآگئیں

 

لاہور(نیاٹائم ویب ڈیسک) ہائرایجوکیشن کمیشن کا بڑا فیصلہ سامنے آگیا، کالجوں میں ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلوں پر پابندی لگادی گئی، کالجوں میں ہونے والےایم فل اورپی ایچ ڈی کے داخلے غیر قانونی تصور ہوں گے۔

 

میڈیارپورٹس کےمطابق ہائرایجوکیشن کمیشن نےایم فل اور پی ایچ ڈی ڈگریوں کی کوالٹی کو برقرار رکھنے کیلئے اہم قدم اٹھایا ہے۔ کالجوں میں ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلوں پر تاحکم ثانی پابندی عائدرہےگی۔ ایچ ای سی نے الحاق شدہ کالجوں میں ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلوں پر پابندی بارے مراسلہ جاری کردیا ہے۔ سرکاری اور پرائیویٹ یونیورسٹیوں سے الحاق شدہ کالجوں کو تاحکم ثانی ایم فل اورپی ایچ ڈی داخلوں سے روک دیا گیا ہے۔

 

ایچ ای سی نے واضح کیاہےکہ وہ الحاق شدہ کالجوں اور اداروں کی ایم فل اور پی ایچ ڈی ڈگریوں کی تصدیق نہیں کرے گا۔ ایچ ای سی نے یونیورسٹیوں سے الحاق شدہ کالجوں میں داخلوں کے متعلق سٹوڈنٹس الرٹ جاری کر دیا ہے۔

 

ایچ ای سی نے تحریری مراسلے کے بعد واضح کردیا ہے کہ سرکاری اور پرائیویٹ کالجوں میں ایم فل اور پی ایچ ڈی داخلے غیر قانونی تصور ہوں گے ،طلباء ان کالجوں میں داخلوں سے اجتناب کریں۔بصورت دیگران کی جمع شدہ فیسیں ضائع ہوجائیں گی اورانہیں ڈگری بھی نہیں مل سکے گی۔

 

 

شہباز اورحمزہ کیخلاف تفتیش مکمل نہ کرنے پر عدالت کا ایف آئی اے پر اظہاربرہمی