ڈاکٹر طاہر شمسی انتقال کرگئے

ڈاکٹر طاہر شمسی انتقال کرگئے

کراچی(نیاٹائم )پاکستان کے معروف ماہر امراض خون ڈاکٹر طاہر شمسی رضائے الٰہی سےانتقال کرگئے ہیں جس کی تصدیق ان کے گھروالوں کی طرف سے کردی گئی ہے۔

 

میڈیا رپورٹس کے مطابق اہلخانہ کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر طاہر شمسی کو  برین ہیمرج کے بعد کراچی کے پرائیویٹ ہسپتال میں ایڈمٹ کرایا گیا تھا جہاں گزشتہ جمعرات سے وہ آئی سی یو میں زیرِ علاج تھے۔خیال رہے کہ ڈاکٹر طاہر شمسی نے 1996 میں پاکستان میں بون میرو ٹرانسپلانٹ متعارف کرایا تھا اور انہوں نے بون میرو ٹرانسپلانٹ کے 650 آپریشن کیے اور 100 سے زیادہ ریسرچ مضامین بھی تحریر کئے۔

 

عالمی وباء کورونا کی پہلی لہر کے دوران وائرس سے صحت مند ہونے والوں کے پلازما کے ذریعے کووِڈ 19 کے مریضوں کے علاج کا خیال بھی ڈاکٹر طاہر شمسی کو ہی پہلی مرتبہ آیاتھا۔

 2011 میں ڈاکٹر طاہر شمسی نے خون سے متعلق بیماریوں کے علاج کے لیے نیشنل انسٹیٹیوٹ فار بلڈ ڈیزیز بھی بنایا۔

 

ڈاکٹر طاہر این آئی بی ڈی میں سٹیم سیل پروگرام کے ڈائریکٹر بھی تھے اور وہ رائل کالج کے پیتھالوجسٹ فیلو بھی تھے۔ ڈاؤ گریڈیٹس ایسوسی ایشن آف نارتھ امریکا نے ڈاکٹر طاہر شمسی کو ان کی خدمات کے اعتراف میں 2016 میں لائف ٹائم اچیومنٹ ایوارڈ بھی دیاتھا۔

 

دوسری جانب وزیراعلی پنجاب سردار عثمان بزدار نے ڈاکٹر طاہر شمسی کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا ہے اور اپنے تعزیتی پیغام میں کہا ہے کہ انکی موت کا سن کر دلی صدمہ ہوا ہے۔وزیراعلی ٰپنجاب کا کہنا ہے کہ طب کی دنیا میں ڈاکٹرطاہر شمسی کا نام ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

 

واضح رہے کہ ڈاکٹر شمسی کو سابق وزیراعظم نوازشریف کی علالت کے باعث کراچی سے لاہور بلایا گیا تھا جہاں انہوں نے جاتی امراء میں نوازشریف کا طبی معائنہ کیا تھا،تب معالجین کی ٹیم نے نوازشریف کو خون کی سپلائی سے متعلق امراض لاحق ہونے پر بیرون ملک علاج کے لئے بھجوانے کی تجویزدی تھی۔

 

ماہر امراض خون ڈاکٹرطاہر شمسی برین ہیمرج کے باعث ہسپتال منتقل