امریکہ میں طوفانی بگولوں نےتباہی مچادی

امریکہ میں طوفانی بگولوں نےتباہی مچادی

کینٹکی(نیا ٹائم ویب ڈیسک): امریکی ریاستوں میں آنے والے طوفانی بگولوں نے ہرطرف تباہی مچا دی ہے۔ موصولہ اعداد و شمار کے مطابق کل رات سے اب تک تقریباً 94 افراد طوفان کے باعث ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ لاپتہ افراد کی تعداد کے بارے میں حتمی طور پر تاحال کچھ بھی کہنا نا ممکن ہے۔

 

‎زرائع نے امریکی اور عالمی ذرائع ابلاغ  کے حوالے سے بتایا ہے کہ چھ امریکی ریاستوں میں آنے والے دو درجن سے زائد طوفانی بگولوں نے گھر، اسکول، شاپنگ سینٹرز، اسپتال اور فیکٹریوں کو بری طرح سے تباہ کیا ہے جس کی وجہ سے لمحوں میں بسے بسائے علاقے تحس نحس ہو چکے ہیں۔

 

‎میڈیا رپورٹس کے مطابق اعداد و شمار کے مطابق سینکڑوں مکانات طوفان کے باعث مسمار ہو چکے ہیں جب کہ ایئرپورٹس پہ کھڑے ہوئے طیارے سیکنڈوں میں  کھنڈر میں تبدیل ہو چکے ہیں۔

 

‎عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی ریاست کینٹکی میں 80 افراد کے ہلاک ہونے کی تصدیق کی جا چکی ہے جب کہ گورنر نے مزید ہلاکتوں کا امکان بھی ظاہر کیا ہے۔اس سلسلے میں امریکی ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ گورنر کینٹکی اینڈی بیشر نے اس ضمن میں خدشہ ظاہر کیا ہے کہ ہلاکتوں کی تعداد 100 سے بھی زائد تجاوز کر سکتی ہے۔

 

‎امریکی میڈیا کی اطلاع کے مطابق گورنر نے بتایا ہے کہ ہلاک ہونے والوں میں زیادہ تر مے فیلڈ کی موم بتی فیکٹری کے ملازمین ہیں۔

‎انہوں نے بتایا کہ طوفان آنے کے وقت فیکٹری میں 110 ملازمین موجود تھے جن میں سے محض 40 کو باہر نکالا جا سکا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مزید کسی کے زندہ بچنے کا خدشہ کم ہے۔

 

‎امریکی میڈیا نے ریسکیو اداروں کے حوالے سے اطلاع دی ہے کہ اب تک کل سے 94 افراد کی ہلاکت سامنے آئی ہے اور درجنوں لاشیں لاپتہ ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔

‎میڈیا رپورٹس کے مطابق متعدد امریکی ریاستوں میں اندھیروں کا راج ہے اور 5 لاکھ سے زائد افراد کے گھروں میں بجلی کنیکشن بھی منقطع ہے۔

 

‎امریکی میڈیا کے مطابق صدر جوبائیڈن نے کہا ہے کہ امریکی تاریخ کے بدترین طوفان سے ہونے والی تبدیلیاں ناقابلِ یقین  ثابت ہو رہی ہیں۔

 

امریکا میں بدترین طوفانی بگولے کے باعث ہلاکتیں 84 ہوگئیں