قرنطینہ پابندیوں سے تنگ خاتون نے ہوٹل جلا دیا

قرنطینہ پابندیوں سے تنگ خاتون نے ہوٹل جلا دیا

آسٹریلیا ( نیا ٹائم ویب ڈیسک )آسٹریلوی شہر کوئنز لینڈ میں  قرنطینہ پابندیوں سے تنگ آکر خاتون نے قرنطینہ ہوٹل کو آگ لگا دی ۔ غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق ہوٹل کو آگ لگانے والی خاتون اور اس کے دو بچوں کو کورونا کے حوالے سے ہوٹل میں قرنطینہ کیا  گیا تھا جس پر خاتون قرنطینہ پابندیوں سے خوش نہیں تھی ۔ آسٹریلوی پولیس نے ہوٹل کو آگ لگانے کے الزام میں خاتون کو فوری طور پر گرفتار کر لیا ۔ خاتون اور اس کے دو بیٹوں کو کورونا کے پیش نظر ہوٹل میں دو ہفتوں کے لیے قرنطینہ میں رہنے کا حکم دیا گیا تھا ۔

شمال مشرقی شہر کیرنز کے پیسفک ہوٹل کی اوپری منزل کو قرنطینہ کے دوران صبح کے وقت خاتون نے آگ لگا دی ۔ آگ نے پوری منزل کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ، جس کے باعث ہوٹل میں قرنطینہ کئے گئے دیگر 160 سے زائد افراد کو باہر منتقل کرنا پڑا ۔ تاہم واقعہ کے دوران کوئی بھی جانی نقصان نہیں ہوا لیکن عمارت کو کافی نقصان ہوا ۔

آسٹریلوی میڈیا کے مطابق ہوٹل کو آگ لگانے والی 31 سالہ خاتون کسی دوسری ریاست سے کوئنز لینڈ میں آئی تھی جس کے باعث انہیں مخصوص مدت کے لیے ہوٹل میں قرنطینہ ہونے کا حکم دیا گیا ۔ جس سے خاتون شدید ناراض تھی ۔ قرنطینہ عرصے کے دوران  ہی خاتون نے اپنے بستر کو آگ لگا دی جو دیکھتے ہی دیکھتے پھیل گئی اور ہوٹل کے پورے فلور کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ۔ اس سے قبل بھی خاتون نے اپنے رویے سے ہوٹل کے ملازمین کو شدید پریشان کر رکھا تھا ۔

واضح رہے اس سے قبل یورپ اور آسٹریلیا کے متعدد شہروں میں کورونا پابندیوں کے خلاف احتجاج بھی ہو چکے ہیں ۔

 

دہشت گردوں کی بس پر فائرنگ ، 31 مسافر ہلاک