مجھے جلدی کراچی بھجوا دیں

مجھے جلدی کراچی بھجوا دیں

 

اسلام آباد( نیا ٹائم ) احتساب عدالت  اسلام آباد نے پی پی رہنما اور  سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کا راہداری ریمانڈ منظور کرلیا۔

 

قومی احتساب بیورو  کے حکام سخت سکیورٹی میں سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو لے کر احتساب عدالت پہنچے جہاں انہیں جج محمد بشیر  کی عدالت میں راہداری ریمانڈ کے لئے پیش کیا گیا۔نیب پراسیکیوٹر کا احتساب عدالت سے  سپیکر سندھ اسمبلی کے  2 دن کے راہداری ریمانڈ کی  درخواست  کرتے ہوئے کہنا تھا کہ  ہمارے پاس سپیکر سندھ اسمبلی  آغا سراج کے وارنٹ گرفتاری ہیں ان کو پہلی دستیاب پرواز سے کراچی منتقل کیا جائے گا لہٰذا  راہداری ریمانڈ  کی منظوری دی جائے۔ اس موقع پر احتساب عدالت کے  جج محمد بشیر نے  سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج سے  سوال کیا کہ آپ کوئی بات کرنا چاہتے ہیں ۔سوال کے جواب میں  آغا سراج درانی نے کہا کہ  نیب سے  کہیں کہ  مجھے جلدی کراچی بھجوا دیں۔عدالت نے نیب پراسیکیوٹر کی  درخواست پرسپیکر سندھ اسمبلی کا  2 روز ہ  راہداری ریمانڈ منظور کرلیا۔

 

یاد رہےکہ  سپیکرسندھ اسمبلی  آغا سراج درانی نے آمدن سے زائد اثاثوں کے کیس میں اسلام آبادسپریم کورٹ میں ضمانت کی درخواست  دائر کی تھی  مگر  عدالت عالیہ  نے انہیں سندھ ہائیکورٹ کے حکم  پر عملدآمد کرتے ہوئے  قومی احتساب بیورو  کےسامنے سرینڈر کرنے کا حکم دیا۔عدالتی حکم کے بعد  سپیکر سندھ اسمبلی کئی گھنٹے  تک عدالت میں موجود رہے  مگر احاطہ عدالت سے باہر آتے ہی نیب نے انہیں گرفتار کرلیا۔سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی نے میڈیا  نمائندوں سے بات چیت  کرتے ہوئے کہا وہ گرفتاری سے نہیں ڈرتے اور اگر انہیں گرفتاری کا ڈر ہوتا تو آج عدالت میں پیش ہی نہ ہوتے۔

 

 

 

الیکشن ای وی ایم پر ہوئے تو مشینوں کو آگ لگا دیں گے