• Thursday, 27 January 2022
سپیکر سندھ اسمبلی کو سرینڈر کرنے کا حکم

سپیکر سندھ اسمبلی کو سرینڈر کرنے کا حکم


اسلام آباد(نیاٹائم)ملک کی سب سے بڑی عدالت نےسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو نیب کے سامنے سرینڈر کرنے کا کہہ دیا۔

 

جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے آغا سراج درانی کی درخواست ضمانت پرسماعت سپریم کورٹ میں کی گئی۔

 

سماعت کے دوران جسٹس منصور علی شاہ نے کہا کہ سندھ ہائیکورٹ نے میرٹ پر آغا سراج درانی کی ضمانت منسوخ کی تھی۔ ہائیکورٹ کے حکم پر عمل کئے بغیر سپریم کورٹ اس پر پروسیڈنگ نہیں کرے گی۔

 

کیس کی سماعت کرنے والے بینج کےجسٹس سجاد علی شاہ نے ریمارکس دیئے کہ جب ہائیکورٹ نے ضمانت منسوخ کی تو آپ کو جیل میں قید ہوناچاہئے تھا۔ آغا سراج درانی نے گرفتاری کیوں نہیں دی؟ ہم آپ کو سپیشل رعایت کیوں دیں؟
کورٹ نے آغا سراج درانی کو نیب کے سامنے سرینڈر کرنے کا آرڈر دیتے ہوئے کہا کہ آغا سراج پہلے سندھ ہائیکورٹ کے حکم پرعمل کریں اور نیب کو گرفتاری دیں اس کے بعد آئندہ ہفتے ان کا کیس بھی سنا جائے گا۔

 

عدالتے عالیہ نے سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کو عدالت کے ایریا سے حراست میں نہ لینے کی درخواست بھی ری جیکٹ کر دی۔اِسکے بعد عدالت نے کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک کے لئے روک دی۔

 

خیال رہے کہ اس سے پہلے سپریم کورٹ نے سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی ضمانت پر رہائی سے متعلق سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ بھی کالعدم قراردیاتھا۔
دوسری جانب سپیکر سندھ اسمبلی پر آمدن سے زائد اثاثوں کے نیب ریفرنس میں فرد جرم بھی لگائی جا چکی ہے۔

 

لیگی اور پی پی پی کے امیدواروں کی نا اہلی کی درخواست مسترد