• Saturday, 04 December 2021
پاکستان سے پولیو کے سائے نہ ہٹ سکے

پاکستان سے پولیو کے سائے نہ ہٹ سکے

اسلام آباد ( نیا ٹائم ویب ڈیسک ) عالمی ادارہ صحت نے پاکستان کو اب بھی پولیو کے حوالے سے کلیئر قرار نہیں دیا ہے ۔ ڈبلیو ایچ او نے پاکستان پر عائد سفری پابندیاں ہٹانے کے بجائے برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ عالمی ادارہ صحت کی جانب سے پاکستان پر عائد کی گئی پولیو پابندیاں مزید تین ماہ تک جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ ڈبلیو ایچ او حکام کے مطابق پاکستان اور افغانستان میں پولیو کے پھیلاؤ کے خدشات تاحال موجود ہیں ۔ پاکستان میں پولیو ویکسی نیشن سے انکاری والدین اورویکسین سے محروم بچے عالمی دنیا کے لیے خطرہ ہیں ۔ جس سے دیگر ممالک میں پولیو پھیل سکتا ہے ۔

عالمی ادارہ صحت کی رپورٹس کے مطابق پاکستان کے سیوریج میں پولیو وائرس میں نمایاں کمی ہوئی ہے تاہم اب بھی پولیو وائرس موجود ہے ۔ رواں برس اب تک پاکستان میں پولیو کا ایک کیس سامنے آیا ہے ۔

ڈبلیو ایچ او کے اعلامیے کے مطابق پاکستان میں پولیو ویکسی نیشن سے انکاری والدین اور بچے بڑا چیلنج ہیں ۔ پولیو ویکسین سے محروم بچوں کے لیے پاکستانی حکومت کی جانب سے کئے جانے والے انتطامات کافی تسلی بخش ہیں ۔ تاہم موجودہ حالات میں افغان مہاجرین کی پاکستان آمد سے پولیو وائرس منتقل ہو سکتا ہےاور پاکستان میں پھیلاؤ کا ذریعہ بن سکتا ہے ۔ ڈبلیو ایچ او کی جانب سے پاکستان سے بیرون ممالک جانے والے افراد کو اب بھی پولیو ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ دکھانا لازم ہو گا ۔ واضح رہے پاکستان پر عالمی ادارہ صحت کی جانب سے پولیو کی وجہ سے مئی 2014 ء میں سفری پابندیاں عائد کی گئی تھیں ۔

واضح رہے پولیو کے خلاف پاکستان کی حکمت عملی کو دنیا بھر میں کافی سراہا گیا ہے ۔ گزشتہ سال کی نسبت اس بار ملک بھر میں پولیو کا صرف ایک ہی کیس سامنے آیا ہے ۔ دنیا بھر سے پولیو کا خاتمہ ہو چکا ہے جبکہ صرف افغانستان اور پاکستان ہی ایسے ممالک رہ گئے ہیں جہاں کے بچوں کے سروں پر اب بھی پولیو وائرس کی تلوار لٹک رہی ہے ۔

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ