• Saturday, 04 December 2021
محمد عامر کی واپسی کے لیے نئی شرط

محمد عامر کی واپسی کے لیے نئی شرط

لاہور ( نیا ٹائم ویب ڈیسک ) قومی کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلر محمد عامر نے ایک بار پھر ٹیم میں واپسی کے امکانات کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی سی بی کی نئی انتظامیہ کے ساتھ تاحال کوئی رابطہ نہیں ہوا ۔ کوئی رابطہ کرے گا تو ہی ریٹائرمنٹ واپس لینے پر غور کروں گا ۔ ٹیم میں عزت کے ساتھ واپسی چاہتا ہوں ، خود سے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ واپس نہیں لوں گا ۔

محمد عامر نے ورچوئل پریس کانفرنس میں کہا کہ پی سی بی کی نئی مینجمنٹ سے کوئی بھی رابطہ نہیں ۔ محمد عامر نے کہا کہ بورڈ میں تبدیلی سے ذہن نہیں بدلا ہے ۔ خود کرکٹ میں واپسی کا اعلان نہیں کرنا چاہتا ، کہ کرکٹ حکام کھلانے سے انکار کر دیں ۔ فی الحال فیملی کے ساتھ خوشگوار زندگی کا لطف اٹھا رہا ہوں ۔ لیگ کرکٹ میں انجوائے کر رہا ہوں ۔

محمد عامر نے مزید کہاکہ پاک بھارت سیریز کے حوالے سے دبئی کرکٹ کونسل کی پیشکش خوش آئند ہے ۔ پاک بھارت سیریز کے لیے دونوں ممالک کو بات چیت کرنا پڑے گی ۔ صرف پیشکش سے فائدہ نہیں دونوں ممالک کے کرکٹ بورڈز کو بھی کوششیں کرنا چاہئیں ۔

فاسٹ باؤلر محمد عامر نے ورلڈ کپ سیمی فائنل میں آسٹریلیا سے حسن علی سے ڈراپ ہونے والے کیچ پر موقف دیتے ہوئے کہا کہ میچ میں شکست صرف ایک کیچ کو قرار دینا مناسب نہیں ۔ حسن علی بہترین فیلڈر ہیں ، کیچز ڈراپ ہو جانا کھیل کا حصہ ہے ۔ حسن سے کیچ ڈراپ ہونے کے بعد بھی ہمارے پاس میچ جیتنے کا موقع تھا ۔ اچھی باؤلنگ سے میچ جیتا جا سکتا تھا ۔ ورلڈ کپ میں قومی کرکٹ ٹیم نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ، ٹیم کو اس کا کریڈٹ دینا چاہئے ۔

محمد عامر نے ویرات کوہلی کو بہترین بلے باز قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ میچ پر کنٹرول کرنا جانتے ہیں ۔ انہیں باؤلنگ کرنا مشکل نہیں لگتا ، تاہم آسٹریلوی اسٹیون سمتھ مشکل بلے باز ہیں ۔ محمد عامر نے کہا کہ ٹی 10 کرکٹ میں باؤلنگ کرنا مشکل کام ہے ، ٹی 10 کرکٹ اولمپکس کا حصہ بننے سے کھیل مزید مقبولیت حاصل کرے گا ۔ پریشر میں کھیلنا اچھا ہے ، کوویڈ سے ریکوری کے بعد ابھی کمزوری محسوس کر رہا ہوں تاہم پہلے سے بہت بہتر ہوں ۔

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ