• Saturday, 04 December 2021
چھ روزہ تقریبات اختتام پذیر

چھ روزہ تقریبات اختتام پذیر

 

شکر گڑھ(نیاٹائم)سکھوں کے روحانی پیشوا بابا گرونانک کے 552 ویں یوم پیدائش کی  چھ روزہ تقریبات اختتام پذیرہوگئیں۔ ہندوستان  سے آئے سکھ زائرین  نے پاکستان کو امن کا پیغام دیا۔

 

بابا گرونانک کی  چھ روزہ تقریبات کےاختتام پر چار ہزار سے زیادہ سکھ زائرین  ننکانہ صاحب سے کرتارپور آئے جہاں سے وہ  انڈیا  واپس روانہ ہو گئے۔سکھ یاتریوں کا کہنا تھا کہ دنیا بھر سے کرتارپور  کوریڈور کے ذریعے آنے والے سکھ زائرین  اس بات کا ثبوت ہیں کہ پاکستان میں تمام   اقلیتیں اپنی مذہبی رسومات آزادی سے ادا کرسکتی ہیں۔

 

زائرین  میں  متعدد  معذور سکھ بھی شامل تھے جنھوں نے پاکستان آمد پر خوشی کا اظہار کیا۔ معمر سکھوں نے بھی مذہبی عبادات ادا  کرکے پاکستانی  انتظامات کی تعریف کی۔سفید پتھر سے  بنایا گیا کرتاپور کا کھلا صحن سکھوں کے  مذہبی رہنما  باباگرو نانک  کی آخری آرام گاہ ہے۔ہرسال ہزاروں کی تعداد میں سکھ زائرین ان کے  درشن کے لئے یہاں پہنچتے ہیں اورمکمل مذہبی  آزادی کے ساتھ  اپنی عبادات کرتے ہیں۔

 

واضح رہے سکھ یاتریوں کی  لاہور واہگہ بارڈر آمد  پر  پاکستانی حکام  کی جانب سے ان کے   لئے خصوصی  اور فول پروف سکیورٹی انتظامات کیے گئے تھے۔سکھ یاتریوں کی آمد پر   ان کا والہانہ استقبال  بھی کیا گیا اور ان پر پھولوں کی پتیاں بھی  نچھاور کی گئیں  جبکہ ان کے لئے لنگر کا بھی وسیع انتظام کیا گیا تھا    ۔بعدازاں  انہیں خصوصی بسوں کے ذریعے کرتار پورروانہ کر دیا  گیا تھا۔بابا گرونانک کی مرکزی تقریب میں شرکت کے لئے  بھارتی وزیر اعلی پنجاب بھی اپنے ایک وفد کے ہمراہ آئے تھے جبکہ  معروف سابق انڈین کرکٹر نوجوت سنگھ سدھو بھی تقریب میں شرکت کے لئے کرتارپور پہنچے تھے۔

 

 

 

سکھ یاتریوں کی کرتارپور آمد

 

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ