• Saturday, 04 December 2021
بھنگ کی پراسسنگ کہاں ہوگی؟

بھنگ کی پراسسنگ کہاں ہوگی؟

 

کابل (نیا ٹائم ویب ڈیسک) افغانستان میں بھنگ کی پراسیسینگ مرکز بنانے کے لیے آسٹریلوی گروپ نے لاکھوں ڈالرزکی سرمایہ کاری کاارادہ ظاہرکیا ہے۔طالبان ترجمان نے اپنی ٹوئٹ میں درج کیا ہے کہ حکومت نے آسٹریلوی کمپنی سی فارم کے اشتراک سے 450 ملین ڈالر کے ایک معاہدے پر دستخط کیےہیں، جس کے تحت سی فارم نامی کمپنی افغانستان میں بھنگ کی پراسیسنگ کے لیے مرکز قائم کرے گی۔طالبان کے پریس ڈائریکٹر قاری سعید خوستی کا اس معاہدے کے بارے میں کہنا ہے کہ اس معاہدے پر دونوں فریقین نے دستخط کیے ہیں اور چند ہی دنوں میں اس منصوبے پر کام شروع ہو جائے گا۔

افغان خبر ایجنسی کے مطابق افغانستان کے ڈپٹی وزیر برائے نارکوٹکس نے گزشتہ روز سی فارم کے نمائندوں سے ملاقات کی تھی، جنہوں نے اس منصوبے میں 450 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کرنے کی خواہش کا اظہار کیا تھا۔ تاہم Cpharm کی طرف سے ابھی تک اس معاہدے کے بارے میں کوئی ردعمل سامنے نہیں آیا ہے۔

قاری سعید خوستی کا کہنا ہے کہ معاہدے کے عین مطابق افغانستان میں ہزاروں ایکڑ پر پھیلی پوست کی فصل تک بھنگ سے ادویات بنانے والی اس کمپنی کو رسائی دی جائے گی۔ خیال رہے کہ اگست میں طالبان کے اقتدار سنبھالنے کے بعد ملک بھر میں بھنگ تیار کرنے والوں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا تھا، اس کارروائی میں منشیات استعمال اور فروخت کرنے والے ڈیلرز کو گرفتار کرنے کے ساتھ ساتھ پوست کی فصل کاشت کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی گئی تھی ۔

‎افغان میڈیا کی رپورٹ کے مطابق آسٹریلوی کمپنی سی فارم اور طالبان حکومت کے مابین چرس سے دوائیاں بنانے کا معاہدے طے پایا ہے، تاہم کمپنی نے اس سے لا علمی کا اظہار کر دیا ہے۔‎اس معاہدے کی خبر افغان میڈیا نے شائع کی تھی، جس کے بعد کمپنی کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

‎بعض میڈیارپورٹس کے مطابق سی فام کمپنی نے افغانستان سےمعاہدے سے لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے اعلامیہ جاری کیا ہے کہ ان کا افغان حکومت سے کسی قسم کا کوئی رابطہ نہیں ہوا۔ اورنہ ہی کوئی معاہدہ کیاگیاہے۔ جبکہ دوسری طرف افغانستان کے نائب وزیرمنشیات کے بیان کے مطابق کمپنی نےاس پراجیکٹ کے لیے 45 کروڑ ڈالر کی انویسٹمنٹ کا وعدہ کیا ہے۔

 

آن لائن ویزا سسٹم کا افتتاح

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ