امریکہ طالبان مذاکرات کب ہورہےہیں؟

امریکہ طالبان مذاکرات کب ہورہےہیں؟

 

واشنگٹن( نیاٹائم ویب ڈیسک) امریکا کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ وہ دہشت گردی کے خلاف جنگ اور افغانستان میں انسانی بحران جیسے دیگر سنگین مسائل کے حل کے لیے اگلے ہفتے قطر میں طالبان کے ساتھ مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے طالبان کے ساتھ مذاکرات کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹام ویسٹ کی قیادت میں امریکا کے خصوصی نمائندے امریکی وفد کی سربراہی کرتے ہوئےقطر میں طالبان نمائندوں سے ملاقات کرے گا۔

نیڈ پرائس نے مزید بتایا کہ دونوں فریقین ہمارے اہم قومی مفادات پر اپنے خیالات کا اظہار کریں گے جس میں عسکریت پسند جماعت داعش اور القاعدہ کے خلاف انسداد دہشت گردی کی کارروائیاں، انسانی امداد، مفلوج افغان معیشت اور امریکیوں کو تحفظ فراہم کرنے کا طریقہ شامل ہے۔

دو ہفتے قبل بھی امریکی خصوصی نمائندے ٹام ویسٹ نے پاکستان میں طالبان نمائندوں سے ملاقات کی تھی جب کہ جمعہ کو اپنے بیان میں انھوں نے کہا تھا کہ فی الحال امریکا محض انسانی ہمدردی کے تحت افغان عوام کو امداد کی فراہمی پر تبادلۂ خیال کرے گا۔

ٹام ویسٹ کا مزید کہنا تھا کہ امریکی مالی اور سفارتی امداد کے حصول کے لیے طالبان کو دہشت گردی کو لگام دینے ، تمام قومیتوں پر مشتمل جامع حکومت کے قیام، اقلیتوں، خواتین کے احترام اور حقوق کی فراہمی سمیت تعلیم اور روزگار تک مساوی رسائی مہیا کرنا ہوگا۔

خیال رہے کہ افغانستان میں طالبان کے تخت پر قبضہ کرنے کے بعد سے امریکہ اور طالبان کے درمیان پہلے مذاکرات 9 اور 10 اکتوبر کو قطر کے دارالحکومت دوحہ میں طے پائے تھے جس میں طالبان حکومت کے قیام کے بعد افغانستان کی حالتِ زار پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔

 

آئی ایم ایف نے پاکستان کی اہم تجویزمسترد کیوں کی؟‎