• Saturday, 04 December 2021
سیب کے علاوہ تمام افغانی پھل ٹیکس سے مستثنیٰ

سیب کے علاوہ تمام افغانی پھل ٹیکس سے مستثنیٰ

کراچی ( نیا ٹائم ) وزیر اعظم عمران خان اور افغانستان کے حوالے سے قائم خصوصی اپیکس کمیٹی کی منظوری کے بعد فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے افغانستان سے پھلوں کی درآمد کی اجازت دے دی ۔ ایف بی آر ذرائع کے مطابق افغانستان سے درآمد ہونے والے سیبوں کے علاوہ باقی تمام پھلوں کی درآمد سیلز ٹیکس سے مستثنیٰ ہوں گے ۔ ایف بی آر نے نوٹیفکیشن بھی جاری کر دی ۔ ایف بی آر کی جانب سے جاری کردہ نوٹیفکیشن کے مطابق حکومت پاکستان نے افغانستان سے درآمد ہونے والے پھلوں پر سیلز ٹیکس ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔تاہم ایف بی آر ذرائع کے مطابق  افغانستان  سے سیب کی درآمد پر ہی سیلز ٹیکس عائد رہے گا ۔افغان پھلوں پر  15 ستمبر 2021 سے افغانستان سے آنے والے پھلوں پر سیلز ٹیکس ختم کردیا گیا ۔ ایف بی آر ذرائع کے مطابق 15 ستمبر سے اب تک افغانستان سے درآمد ہونے والے پھلوں پر وصول کیا گیا سیلز ٹیکس بھی واپس کیا جائے گا ۔

ایف بی آر کی جانب سے افغان پھلوں پر سیلز ٹیکس ختم کرنے کے حوالے سے موقف دیتے ہوئے آل پاکستان فروٹ اینڈ ویجیٹل ایکسپورٹر ایسوسی ایشن سرپرست اعلی وحید احمد  نے کہا کہ حکومت کا افغانستان سے پھلوں کی درآمد پر ٹیکس ختم کرنا اچھا اقدام ہے، اس فیصلے سے افغانستان کو سپورٹ ملے گی۔  افغانستان سے سیلز ٹیکس چھوٹ کے ساتھ پھل آئیں کوئی مسئلہ نہیں۔ تاہم افغانستان کے پھلوں کی آڑ میں دیگر ممالک کی مصنوعات پاکستان میں فروخت ہونے سے معاملہ خراب ہو گا ، اس پر تحفظات ہیں ، اس حوالے سے حکومت پاکستان اور ایف بی آر کو کوئی واضح لائحہ عمل تیار کرنا ہو گا ۔  

فروٹ اینڈ ویجیٹیبل ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے سرپرست اعلیٰ  وحید احمد نے مزید کہا کہ اس فیصلے سے افغانستان کے ساتھ ٹرانزٹ ایکسپورٹ کی سہولت ملے گی۔ افغانستان بھی پاکستان کے لئے بڑی مارکیٹ ہے۔ پاکستان 70 فیصد برآمدات افغانستان کرتا ہے۔  جبکہ افغانستان سے 30 فیصد درآمدات کی جاتی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ افغانستان سے بنا سیلز ٹیکس کے آنے والے پھلوں کی جانچ پڑتال کسٹم حکام کو کرنا ہو گی ۔

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ