• Saturday, 04 December 2021
ملزمہ پرتشدد۔آئی جی پنجاب کا نوٹس

ملزمہ پرتشدد۔آئی جی پنجاب کا نوٹس

قصور(نیاٹائم ) قصور میں زیر حراست ملزمہ کو ایک خاتون نے تشدد کا نشانہ بنایا جس دوران لیڈی کانسٹیبل کی طرف سے ویڈیو  بھی بنائی گئی۔

 

میڈیا رپورٹس کے مطابق ملزمہ پر تشدد کا واقعہ قصور  کے تھانہ صدر  میں پیش آیا جہاں  ملزمہ جمیلہ پر  ساجدہ نامی خاتون  نے تشدد کیا اور تشدد کے دوران خاتون نے   لیڈی کانسٹیبل کو اپنا موبائل فون دے کر ملازمہ  پر تشدد کی ویڈیو بھی بنائی۔

 

زیر حراست ملزمہ کی ویڈیو وائرل ہونے پر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر (ڈی پی او  ) صہیب اشرف نے  ایکشن لیتے ہوئے انویسٹی گیشن افسر حیدر علی، لیڈی کانسٹیبل اورتشدد کرنے والی خاتون  ساجدہ کےخلاف مقدمہ بھی درج کروادیاہے۔

 

 پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمہ جمیلہ ڈکیتی کیس میں جسمانی ریمانڈ پر ہے۔ تشدد میں ملوث خاتون ساجدہ کو گرفتار  کیا جاچکا ہے جب کہ  انویسٹی گیشن انسپکٹر  اورلیڈی کانسٹیبل کومعطل کرکے قانونی کارروائی کا آغاز کردیا گیا ہے۔

 

دوسری طرف آئی جی پنجاب نے  ڈکیتی واردات میں زیر حراست خاتون پر تشدد کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے لیڈی کا نسٹیبل اور پولیس اہلکار کو نوکری سے برخاست کرنے کا آرڈر دیا ہے۔

 

ترجمان کا کہنا ہے کہ  آئی جی پنجاب کے حکم پر واقعے میں ملوث پرائیویٹ خاتون اور اہلکاروں کو سخت سزا دلائی جائے گی۔

 

آئی جی پنجاب کا کہنا تھا کہ   پنجاب پولیس میں ایسی کالی بھیڑوں کی کوئی جگہ نہیں ہے اور کسی معافی کے مستحق نہیں ہیں۔

 

پولیس اہلکار نے خودکشی کیوں کی؟

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ