• Thursday, 09 December 2021
نئےسوشل میڈیارولزکی منظوری

نئےسوشل میڈیارولزکی منظوری

اسلام آباد (نیا ٹائم) وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے )نے نئے سوشل میڈیا رولز تیار کرلیے ہیں جس کی منظوری گزشتہ روز  ہونےوالے وفاقی کابینہ  کے اجلاس  میں دے دی گئی ہے جبکہ وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی جلد نئے سوشل میڈیا رولز کا نوٹیفکیشن  بھی جاری کردے گی،نئے رولز میں تمام سٹیک ہولڈرز اورشہریوں کی تجاویز شامل کی گئی ہیں۔ نئے سوشل میڈیا رولزکو "ریمول اینڈ بلاکنگ ان لاء "فل آن لائن کنٹینٹ رولز 2021 رکھا گیا ہے۔یادریے کہ اس سے  پہلے بھی  جاری کردہ رولز کوسوشل میڈیا کمپنیوں نےچیلنج کردیا تھا،نئےرولزمیں پیکا ایکٹ 2016 کے سیکشن 37 اورسیکشن 51 کو بھی شامل کیا گیا ہے ۔نئے سوشل میڈیا رولز میں رولز بنانے سے متعلق اتھارٹی کے لئے تمام رکاوٹوں کوختم کردیا گیا ہے جبکہ  نئے رولز میں نوٹس کے اجراء، کیسز اور کارروائی کی وضاحت کی گئی ہے۔ نئے رولز  میں  کہا گیا  ہے کہ  یہ رولز لاگو ہونے پرتمام سوشل میڈیا کمپنیاں خود کو تین ماہ  کے اندر پی ٹی اے کے ساتھ رجسٹر کروانے اور سوشل میڈیا فورمز 6 ماہ کے اندر اپنے مستقل دفاتر کھولنے کی پابند ہوں گی۔ وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور پی ٹی اے کے نئے رولز کےمطابق تمام سوشل میڈیا فورمز پاکستان میں ایک کمپلائنس آفیسر اور گرینونس آفیسرتعینات کریں گی اور دونوں افسران کی تقرری  تین ماہ کے اندر عمل میں لائی جائے گی۔ گرینونس آفیسر شکایت کےاندراج کےسات روز میں مسئلے کا حل دینے کا پابند ہوگا۔ نئے رولز میں بتایا گیا ہے کہ سوشل میڈیا کمپنیاں آن لائن شکایت کا میکنزم اور کمیونٹی گائیڈ لائنزجاری کریں گی، اس کے علاوہ نئے رولز کی خلاف ورزی پر سوشل میڈیا کمپنیوں کو بھاری جرمانے بھی ادا کرنا  ہوں گے،رولز کی خلاف ورزی کرنے پرسوشل میڈیا کمپنیوں کو 50 کروڑ روپے تک جرمانہ ہوسکےگا۔ سوشل میڈیا کمپنیاں مقامی قوانین کی پاسداری کی پابند ہوں گی۔ شکایات کے اندراج کا میکنزم اور فارم بھی رولز میں شامل  ہیں۔

 

29کروڑ میں پلیٹ فروخت

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ