دفاتر میں حاضری کم نہیں کر رہے ، صوبائی وزیر ماحولیات

دفاتر میں حاضری کم نہیں کر رہے ، صوبائی وزیر ماحولیات

لاہور ( نیا ٹائم ) صوبائی وزیر ماحولیات پنجاب محمد رضوان نے کہا ہے کہ لاہور کی فضائی آلودگی ابھی خطرناک حد تک نہیں پہنچی ہے ، ابھی لاہو رمیں سکول اور دفاتر میں حاضری 50 فیصد تک نہیں لا رہے ہیں ۔ لاہور میں نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر ماحولیات نے کہا کہ لاہور شہر میں ابھی سموگ نہیں ہے ، صرف گرد سے اٹی ہوئے ہوا ہے جس میں گرد کے ذرات موجود ہیں ۔ لاہور کی فضائی آلودگی شہر میں جاری ترقیاتی منصوبوں کی وجہ سے ہے جن سے اٹھنے والی گرد بھی ہوا میں شامل ہے ، انہوں نے کہا کہ جہاں جہاں ترقیاتی کام ہو رہے ہیں وہاں پانے کے چھڑکاؤ کی ہدایات دی گئی ہیں ، اس سے امید ہے ہوا میں موجود گرد میں 50 فیصد تک کمی آ جائے گی ۔

صوبائی وزیر ماحولیات محمد رضوان نے مزید کہ اکہ فضائی آلودگی کے اعداد و شمار فارمولے کے تحت ہی جاری کئے جاتے ہیں ، 24 گھنٹے پہلے کے اعداد و شمار غلط ہیں ، انہوں نے انکشاف کیا کہ لاہور میں ماحولیاتی آلودگی کو مانیٹر کرنے کے لیے صرف 2 سسٹم کام کر رہے ہیں جبکہ باقی خراب ہیں ۔  

واضح رہے لاہور ہائیکورٹ نے سموگ کے باعث حکومت کو نجی دفاتر اور سکولز میں 50 فیصد حاضری کے ساتھ کام کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرنے کا حکم دیا تھا ۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم نے شیراز ذکاء ایڈووکیٹ اور دیگر کی متفرق درخواستوں پر سماعت کرتے ہوئے پنجاب حکومت کو ہدایات دی کہ وہ تمام نجی دفاتر میں 50 فیصد حاضری کے ساتھ کام کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرے ۔  عدالت نے ائیر کوالٹی انڈیکس 400 سے زائد ہے وہاں سکول بند کرنے کی تجویز کو رد کر دیا ۔ عدالت نے پنجاب حکومت کے وکیل کو ہدایت کی کہ سرکاری اداروں میں بھی 50 فیصد سٹاف کے ساتھ کام کرنے پر غور کیا جائے ۔