• Wednesday, 20 October 2021
بھارت میں مسلمانوں کی زندگی جہنم بن گئی

بھارت میں مسلمانوں کی زندگی جہنم بن گئی

غازی آباد ( نیا ٹائم ویب ڈیسک ) پنڈت اور حواریوں کے ساتھ مل کر 10 سالہ مسلم لڑکے کو غلطی سے مندر میں داخل ہونے پر شدید تشدد کا نشانہ بنا ڈالا ۔ بچے کو تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد پولیس کے حوالے کر دیا گیا ۔ خبر رساں اداروں کے مطابق انتہا پسند ہندوؤں نے 10 سالہ مسلم لڑکے کو داسنا دیوی مندر میں داخل ہونے پر تشدد کا نشانہ بنایا ۔ مسلمانوں کے خلاف نفرت کی آگ میں جلنے والے پجاری نرسنگھا نند نے پہلے اپنے حواریوں کے ساتھ مل کر بچے کو بیہمانہ تشدد کا نشانہ بنایا اور پھر پولیس کے حوالے کر دیا ۔ پنڈت اور اس کے حواریوں سے 10 سالہ معصوم بچہ شدید زخمی ہو گیا جسے انتہا پسندوں نے طبی امداد بھی نہ ملنے دی ۔ سوشل میڈیا پر بچے کے تصاویر وائرل ہونے پر پولیس بھی نیند سے جاگ گئی اور پنڈت اور اس کے حواریوں کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ۔ اگرچہ پولیس نے عوامی دباؤ اور سوشل میڈیا پر ویڈیو اور تصاویر وائرل ہونے پر پنڈت اور اس کے حواریوں کے خلاف مقدمہ تو درج کر لیا تاہم تاحال اسے گرفتار نہیں کیا گیا ۔ واضح رہے پنڈت نرسنگھا نند نے دہلی میں ایک سیمینار کے دوران پیغمبر اسلام کی شان میں گستاخی بھی کی تھی جس پر اس کے خلاف مقدمہ درج ہوا تھا ۔  مسلم وکلاء کا موقف ہے کہ اگر نفرت آمیز اور اسلام مخالف بیانات پر پہلے ہی پنڈت کو گرفتار کیا جاتا تو آج یہ واقعہ پیش نہ آتا ۔ واضح رہے اس سے قبل 14 سالہ مسلمان لڑکے کو مندر سے پانی پینے پر بھی ہندو انتہا پسندوں نے تشدد کا نشانہ بنایا تھا ۔