• Saturday, 04 December 2021
بلدیاتی نظام میں تبدیلی

بلدیاتی نظام میں تبدیلی

کراچی (نیا ٹائم ) سندھ کی جانب سے لوکل گورنمنٹ  ایکٹ 2013 میں  ترمیم  کا اصولی  فیصلہ  کیا گیا ہے۔

اس حوالے سے ذرائع  کا کہنا ہے کہ سندھ میں 2013ء کے لوکل گورنمنٹ ایکٹ کو ختم کردیا  جائےگا اور  نیا بلدیاتی قانون  عمل لایا جائے گا، مجوزہ بلدیاتی نظام میں میونسپل فنکشنز اور ٹیکس وصولیوں کا نیا طریقۂ کار واضع   ہوگا   ، ذرائع  نے یہ بھی بتایا کہ نئے بلدیاتی نظام کی تشکیل کیلئے وزیر بلدیات سندھ کی زیر صدارت اہم  اجلاس بھی  ہوا، اجلاس  میں  اصولی فیصلہ کیا گیا کہ ٹاؤنزکی  سطح پربلدیاتی نظام لایا جائے جبکہ  سندھ کابینہ کے  سینئرارکان بلدیاتی قانون پر سفارشات تیار کررہے ہیں۔

ذرائع کا کہنا  ہے کہ پیپلزپارٹی کی اعلی قیادت بلدیاتی اداروں کو مالی و انتظامی اختیارات  دے گی تاہم مجوزہ بلدیاتی قانون میں بعض بلدیاتی کونسلز کو ختم کرنے کی بھی تجویز پر غور کیا جائےگا ۔ دوسری جانب  وفاقی  حکومت  نے نئے مقامی حکومتوں کے نظام کا ڈرافٹ تیار کرلیا  ، ڈرافٹ  کے مطابق پہلے مرحلے میں وفاق، پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے اضلاع میں انتظامی سربراہ مئیر جبکہ تحصیل کا سربراہ ڈپٹی میئر ہوگا جن کا انتخاب براہ راست کرنے کی تجویز  دی گئی  ہے  اس کے علاوہ نئے نظام کے تحت پولیس اور ضلعی انتظامیہ میئر کے ماتحت ہوگی اور ضلع کے مالی اختیارات بھی میئر کے پاس ہوں گے جبکہ  ضلع کے پولیس اور انتظامی سربراہ کی کارکردگی رپورٹ لکھنے کا اختیار  بھی مئیر کے پا س ہوگا ۔

ادھر وزیراعلیٰ اور وزراء نئے نظام میں مداخلت نہیں  کرسکتےہیں اورضلعی حکومتیں اس حوالے سے خود مختار ہوں گی ۔

 

پنجاب یونیورسٹی میں جرنلزم سوسائٹی کا قیام

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ