• Wednesday, 20 October 2021
افغان کرکٹ چیف کا خواتین کے کھیلوں بارے اعلان

افغان کرکٹ چیف کا خواتین کے کھیلوں بارے اعلان

کابل(نیاٹائم ویب ڈیسک)چیئرمین افغانستان کرکٹ بورڈکا کہنا ہےکہ ملک میں خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے پر باضابطہ کوئی پابندی نہیں لگائی گئی۔
نیوز ادارے الجزیرہ سے گفتگو میں افغان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین عزیز اللہ فاضلی نے کہا کہ ہم نے ملک میں فی میل کرکٹر کے حوالے سے طالبان کی اعلیٰ قیادت سے بات کی ہے جس پر ان کا ماننا ہےکہ ملک میں خواتین کی گیمز بالخصوص ویمن کرکٹ پر کوئی پابندی نہیں لگائی۔
افغان کرکٹ چیئرمین عزیز اللہ فاضلی کے مطابق طالبان رہنماؤں نے کہا کہ انہیں خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے سے کوئی ایشو نہیں ہے۔
عزیزاللہ فاضلی نےمزید کہا کہ ہمیں خواتین کو کرکٹ کھیلنے سے روکنے کے لیے نہیں کہا گیا ہے۔ ہمارے پاس 18 برس سے خواتین کی ٹیم ہے حالانکہ وہ کوئی بڑی ٹیم نہیں۔
افغان بورڈ کے چیف کا کہنا تھا کہ مگر ہمیں اپنے دین اور ثقافت کو ذہن میں رکھنے کی ضرورت ہے۔ا گر خواتین اِس دائرے میں لباس کو ملحوظِ خاطر رکھتی ہیں تو ان کے کھیلوں کی سرگرمیوں میں حصہ لینے پر کوئی ایشو نہیں ہے۔
اُنہوں نے کہا کہ دوسرے ممالک کی ٹیموں کی طرح فٹ بال کیلئے اسلام خواتین کو شارٹس پہننے کی اجازت نہیں دیتااور ہمیں اس طرح کی چیزیں اپنے مائنڈ میں رکھنا ہیں۔ سپورٹس میں ہمیں کوئی ایشو نہیں ہے، ہم پچھلے 2 ماہ سے ٹریننگ کررہے ہیں حتیٰ کہ طالبان حکومت کے آنے کےبعد بھی کھیلوں کی سرگرمیاں جاری ہیں۔
افغان کرکٹ چیف کا کہنا تھا کہ وہ کرکٹ کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔ وہ خود سابق کھلاڑی ہیں اور بورڈ کے معاملات میں پچھلے 15 برس سے ہیں
خیال رہے کہ افغانستان میں طالبان کے قبضے کےبعد طالبان کی طرف سے خواتین کے کھیلوں میں حصہ لینے پر پابندی لگائی گئی تھی۔ جس میں طالبان کا کہنا تھا کہ خواتین کو کرکٹ سمیت جسم کی نمائش والے کسی کھیل کی پرمیشن نہیں دیں گے

 

پی سی بی کو کس کی تلاش؟